Search This Blog

Loading...

السلام علیکم ورحمة الله وبرکاته ډېرخوشحال شوم چی تاسی هډاوال ويب ګورۍ الله دی اجرونه درکړي هډاوال ويب پیغام لسانی اوژبنيز او قومي تعصب د بربادۍ لاره ده


اَلسَّلَامُ عَلَيْكُمْ وَرَحْمَةُ اللهِ وَبَرَكَا تُهُ




اللهم لك الحمد حتى ترضى و لك الحمد إذا رضيت و لك الحمد بعد الرضى



لاندې لینک مو زموږ دفیسبوک پاڼې ته رسولی شي

هډه وال وېب

https://www.facebook.com/hadawal.org


د عربی ژبی زده کړه arabic language learning

https://www.facebook.com/arabic.anguage.learning
There was an error in this gadget

Saturday, April 9, 2011

اسلامی اور اصلاحې کتب کی عظیم ذخیرا



اسلامی اور اصلاحې کتب کی عظیم ذخیرا


Archive for the ‘مکتوبات و ملفوظات’ Category

Makateeb-e-Syed-ul-Mursaleen (بلاغ المبین یعنی مکاتیب سید المرسلین)

June 9, 2010

پیغمبر اسلام صلی اللہ علیہ وسلم کی حیات پاکیزہ سے متعلق صدہا مصنفین اسلام نے قابل قدر تصانیف لکھی ہیں اور اس کثرت سے لکھی ہیں کہ آج تک کسی علمی یا ادبی موضوع پر اس قدر سیر حاصل کتابیں تصنیف نہیں کی گئیں۔ سیرت مقدسہ کی ان کتابوں میں مصنفین نے جہاں رسول اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کی پاک زندگی کے مختلف گوشوں پر پوری شرح و بسط کے ساتھ روشنی ڈالی ہے اسی کے ذیل میں انہوں نے آپ کے ان فرامین و مکاتیب عالیہ کا بھی ذکر کیا ہے جو مختلف حالات کے زیر اثر دنیا کے مختلف حصوں میں ارسال کیے گئے۔ سیرت مقدسہ کی کوئی تصنیف ان مکاتیب عالیہ کے ذکر سے خالی نہیں اور ان میں خطوط سے متعلق دوسرے حالات بھی کسی قدر تفصیل کے ساتھ ملتے ہیں، لیکن یہ کہنا غالبا مبالغہ سے یکسر خالی ہے کہ اردو میں آج تک کوئی کتاب ایسی تصنیف نہیں کی گئی جس کا موضوع واحد صرف ان فرامین مقدسہ کی جمع و ترتیب اور ان سے متعلق بیش قیمت تاریخی حوالجات و اسانید کا پوری محنت و جان کاہی کے ساتھ بہم پہچانا ہو جو خالص تبلیغ اسلام کی غرض سے لکھے گئے ہیں اور اس سلسلہ میں جو اہم حدیثی و تاریخی اشکالات پیدا ہوجاتے ہین ان کو ایسے پسندیدہ اسلوب اور وسیع النظری کے ساتھ رفع کیا گیا ہو کہ تاریخی بیانات اور آثار و روایات میں کوئی تناقص باقی نہ رہتا ہو۔اس بناءپر بے خوف تردید کہا جاسکتا ہے کہ زندقہ و الحاد کے اس ہولناک دور میں فرامین نبوی صلی اللہ علیہ وسلم سے متعلق یہ کتاب ایک منفرد اہمیت کی حامل ہے۔دعاہے کہ مولف کی یہ خدمت بار قبول پائے اور حق تعالی مسلمانوں کو اس سے متمتع ہونے کی توفیق اور فاضل مصنف کو اجر جزیل و ثواب عظیم مرحمت فرمائے ۔ آمین



::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::

Hazrat Abu Bakar ke Sarkari Khutoot (حضرت ابوبکر کے سرکاری خطوط)

June 9, 2010
ابوبکر صدیق کے سرکاری خطوط جن کی تعداد ستر ہے جہاں تک ہمیں معلوم ہے یہ خطوط نہ تو عربی میں کبھی جمع ہوئے اور نہ بہ شکل ترجمہ دوسری زبانوں میں ، ابوبکر صدیق کا عہد خلافت تھا تو بہت مختصر یعنی صرف سوا دو سال لیکن اس میں واقعات و حوادث کی طغیانی سی رہی، ہر طرف بغاوتیں ، ہر طرف فوج کشی، جب بغاوتیں دور ہوئی تو ایک طرف نظم و تدبیر کا دور شروع ہوا تو دوسری طرف عراق و شام میں فتوحات، اس عرصہ میں خلیفہ نے سینکڑوں مراسلے بھیجے ہوں گے لیکن افسوس ہے کہ ان میں سے صرف پانچ چھ درجن سے زیادہ ہمیں نہ مل سکے اور شاید اس سے زیادہ مل بھی نہ سکیں۔اللہ تعالیٰ مولف کی اس کوشش کو اپنی بارگاہ میں مقبول فرمائے۔آمین


:::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::




گستاخی رسول اور اسلام (Gustaakh-e-Rasool aur Islam)

December 29, 2010

اس وقت دنیائے اسلام جس دور سے گزر رہی ہے یہ دور اسلامی تاریخ کا انتہائی مشکل اور کٹھن دور ہے۔ امت مسلمہ کو جو مشکلات آج درپیش ہیں شاید ماضی میں اتنی مشکلات کبھی درپیش نہیں ہوئیں۔ ہر آنے والا دن خطرے یا پریشانی کی ایک نئی جہت لے کر آتاہے۔حالیہ دنوں میں اخبارات میں داعیٔ اسلام، محسن انسانیت اور پیغمبر اعظم صلی اللہ علیہ وسلم کی پاکیزہ زندگی کو تنقیص و توہین کا نشانہ بنایا گیا ہے اور اب پاکستان میں موجود توہین رسالت کے قانون کو ختم کرنےکی سازشیں کی جارہی ہیں۔ آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم کی عزت و حرمت ایک مسلمان کے لئے سب سے بڑی متاع ایمان ہے۔ مسلمان سب کچھ برداشت کر سکتا ہے لیکن محبوب خدا حضرت محمد رسول اللہ صلی علیہ وسلم کی شان اقدس میں ادنی بے ادبی اور گستاخی اس کے لئے ناقابل برداشت ہیں۔ نیز توہین رسالت کا قانون مغربی معاشرہ کی دوغلی فطرت کا عکاس ہے جہاں حضرت مریم، حضرت عیسی اور صدر امریکہ کے بارے میں گستاخی تو قابل سزا جرائم ہیں لیکن پیغمبر اسلام کی توہین و تنقیص کو آزادی اظہار کا نام دیا جاتاہے۔ بحیثیت مسلمان، ہم سب کا یہ فرض ہے کہ مغربی عناصر کی ریشہ دوانیوں کو سمجھیں اور توہین رسالت کے خلاف اٹھنی والی ہر آواز کومنہ توڑ جوا ب دیں۔ ان عناصر کی سازشوں کو سمجھنے کے لیے یہ رسائل ترتیب دیے گئے ہیں، اللہ مؤلفین کو جزائے خیر عطا فرمائے اور ہم انہیں سمجھنے اور اپنا کردار ادا کرنے کی توفیق نصیب فرمائے اور ہمارا حشر شہدائے ناموس رسالت میں فرمائے۔آمین ثم آمین


 :::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Ahkam-e-Janaiz (احکام جناءز)

May 30, 2009
Ahk_Jnzموت ایک ایسی حقیقت ہے جس کا آج تک نہ کوءی انکار کر سکا ہے نہ قیامت تک کر سکتاہے۔ دنیا میں جینے مرنے کا عمل تسلسل سے جاری ہے۔روز کوءی جیتا ہے کوءی مرتا ہے اور ہر مسلمان کو جینے مرنے کے مساءل سے واقف ہونا نہایت نہایت ضروری تھا۔ بد قسمتی سے عام لوگ ان مساءل سے بے اعتناءی برتنے کے سبب بالکل ناواقف ہیں اور جب کبھی کوءی ایسا موقع پیش آتا ہے تو سخت پریشان ہوتے ہیں اور ڈھونڈنے پر بھی صحیح راہنماءی کرنے والا کوءی فرد نہیں ملتا۔زیر نظر رسالہ میں مولف نے مخترصر انداز میں مسنون طریقہ کے مطابق میت کی تجہیز و تکفین کے ضروری ضروری مساءل تحریر کردیے ہیں تاکہ عام لوگ بھی اس کی رہنماءی میں مسنون طریقہ کے مطابق میت کے آخری امور انجام دے سکیں۔ اور نوک جھونک اور ہر بات پر اعتراض کرنے والے حضرات کی تشفی کیلیے ہر مسءلہ کا حوالہ حدیث شریف اور مستند فقہ کی کتابوں سے دیا گیا ہے؛ نیز دیگر مقتدر علماء کرام و مفتیان عظام سے ان کی توثیق بھی کروالی ہے۔ اللہ تعالی سے دعا ہے کہ وہ ناچیز کی اس کوشش کو اپنی بارگاہ میں قبول و منظور فرماکر عوام کی فلاح اور راقم آثم کی نجات کا ذریعہ بنادے۔ آمین


:::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Ahkam-e-Miyyat (احکام میت)

May 30, 2009
Ahm_Mytزیر نظر کتاب میں مولف نے مسلمان کے آخری لمحات سے لے عالم برزخ تک تمام مراحل کے متعلق احادیث نبویہ اور فقہی مساءل نہایت تفصیل و تحقیق سے جمع کیے گءے ہےں۔ اس کتاب میں تمام مساءل پر از ابتداء تا انتہاء نہایت محققانہ نظر کی ہے اور ہر عنوان کے تحت ہر فقہی کی تحقیق و تصدیق کی ہے۔ خصوصا مساءل و احکام متعلق شہید ؛ عدت؛ وراثت؛ ترکہ؛ وصیت؛ رسومات بدعت کو نہایت وضاحت و تشریحات کے ساتھ دور حاضر کی ضروریات کو پیش نظر رکھتے ہوءے تحریر کیا ہے۔ اس اعتبار سے اب یہ کتاب اپنے موضوع پر الحمد للہ نہایت جامع و نافع اور مستند ہے؛ اللہ تعالی اپنے فضل و کرم سے شرف قبولیت عطاء فرماءیں اور اس کے مطابق عمل کرنے والوں کو ہدایت فرماءیں۔آمین




::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Aghlat-ul-Awaam (اغلاط العوام)

January 6, 2009 agh_awmموجودہ دور میں عوام میں بعض ایسے غلط مشہور ہیں جن کی کوءی اصل شرعی اور وہ ان کا ایسا یقین کءے ہوءے ہیں کہ ان کو اس میں شبہ بھی نہیں پڑتا۔ تاکہ علماء سے تحقیق ہی کر لیں؛ اور اکثر علماء کو بھی ان غلطیوں میں عوام کے مبتلا ہونے کی اطلاع نہیں تاکہ وہی وقتافوقتا ان کا ازالہ کرتے رہیں۔ جب نہ عوام کی طرف سے تحقیق ہو اور نہ علماء کی طرف سے تنبیہہ ہو تو ان غلطیوں کی اصلاح کی کوءی صورت ہی نہ رہے۔ یہ رسالہ فقہیات کا مجموعہ موضوعات ہے اور گو یہ مساءل مختلف ابواب کے ہیں مگر ترتیب وار لکھنا دشوار سے خالی نہ تھا اس لءے مختلف طور پر لکھ دیا ہے


:::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::




Darhi 1 Islami Sha’ar (داڑھی ایک اسلامی شعار)

January 1, 2009
dar_asqزیر نظر رسالہ میں مولف رسالہ نے داڑھی کی شرعی حیثیت اور اس کی اہمیت کے ضمن میں اسکا حب رسول کا اظہار ہونا؛ مومن کے چہرے کی رونق ہونا؛ بارعب شخصیت کی پہچان؛ مسلمان کے چہرے کی زینت اور مسلمان کی ظاہری علامت ہونا ٹھوس حوالوں سے ثابت کیا ہے۔ دعا ہے اللہ ہم سب کو شعاءر اسلامی اپنانے اور استقامت عطا فرماءے۔آمین


:::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Islam me Khulaa ki Haqeeqat (اسلام میں خلع کی حقیقت)

January 1, 2009
khla_hq1تمام فقہاء کا اس پر اتفاق ہے کہ ” خلع ” شوہر اور بیوی کا ایک باہمی معاملہ ہے جو فریقین کی رضامندی پر موقوف ہے۔ لیکن ۱۹۶۷ء میں سپریم کورٹ آف پاکستان کے بعض جج صاحبان نے یہ فیصلہ دیا کہ اگر عدالت تحقیق کے ذریعہ اس نتیجے پر پہنچے کہ زوجین حدوداللہ قاءم نہیں رکھ سکیں گے تو عدالت شوہر کی رضامندی کےبغیر خلع کراسکتی ہے۔چنانچہ اس فیصلے کے خلاف حضرت مولانا مفتی محمد تقی عثمانی صاحب مدظلہم نے یہ مقالہ تحریر فرمایا؛ اور اس فیصلے کا تفصیل جواب دیاجو پیش خدمت ہے۔ آجکل ایک بار پھر یہ موضوع اسلامی نظریاتی کونسل میں زیربحث ہے جس کی وجہ اس مقالہ کی اہمیت اور بڑھ گءی ہے۔ اللہ سے دعا ہے کہ یہ مقالہ عوام الناس کی فلاح اور ہدایت کا ذریعہ بنے۔ آمین

 ::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::

اسلام اور سیاست حاضرہ(Islam aur Siyasaat-e-Hazira)

By rahesunnat عصر حاضر میں اسلام کے عملی نفاذ اور زندگی کے مختلف شعبوں میں نت نئے پیدا ہونے والے مسائل کے اسلامی حل کے لیے متفرق کوششیں کی جارہی ہیں جو ایک مستحسن عمل ہے اور علماء اپنی ذمہ داریوں کو محسوس کرتے ہوئے عوام کی رہنمائے فرما رہے ہیں۔ اللہ انہیں دارین میں جزائے خیر عطا فرمائے۔ اسی سلسلہ میں ایک مسئلہ سیاست بھی ہے۔زیر نظر رسالہ میں مولف نے ووٹ کی شرعی حیثیت، دینی و سیاسی جماعتوں، مسئلہ قومیت اور بین الاقوامی منظر نامی میں عالم اسلام کو درپیش مسائل جیسے اہم موضوعات پر قلم اٹھایا۔ اللہ تعالی سے دعا ہے کہ وہ اس کاوش کو قبول فرمائے اور ہمارے لیے ہدایت کا ذریعہ بنائے۔آمین


:::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


اللہ کے حبیب کی محبوب سنتیں وآداب زندگی (Allah ke Habib ki Mehboob Sunnatin wa Adaab-e-Zindagi)

By rahesunnat اللہ نے قرآن کریم میں فرمایا ہے کہا تباع سنت ہی سے انسان اللہ تعالیٰ کی محبوبیت کا مقام حاصل کرسکتا ہے، لہٰذا علمائے امت نے ہر دور اور ہر زبان مین آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم کی سنتوں کو جمع کر کے مسلمانوں کو انہیں اختیار کرنے کی ترغیب دی ہے ہر مسلمان کے لیے ضروری ہےکہ وہ ایسی کتابوں کو اپنے گھر میں رکھ کر گھر والوں کو سنائیں اور ان پر عمل کرنے اور کرانے کا اہتمام کریں۔ زیر نظر بھی اسی سلسلے کی ایک کڑی ہے، اللہ تعالیٰ سے دعاہے کہ اسے مسلمانوں کے لئے نافع اور مفید بنائے۔ اللہ تعالیٰ ہم سب کو اتباع سنت کی توفیق اورا س کی برکات عطا فرمائیں آمین۔


:::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::




بدعت اور اہل بدعت اسلام کی نظر میں(Bidat aur Ahl-e-Bidat Islam ki Nazar Me)

By rahesunnat زیر نظر کتاب میں مولف نے بڑی ہمت اور محنت شاقہ سے بدعت کے بارے میں حضرات صحابہ کرام، تابعین عظام، مجتہدین کرام، مجددین امت اور اولیاء اللہ کے اقوال کو جمع فرمایا ہے۔ یہ سب مضامین مختلف اسفار میں منتشر تھے، آپ نے انہیں یکجا کر کے ایک نہایت مفید ترتیب دی ہے۔ قاری کو ایک ایسے محل میں لاکھڑا کیا ہے جس کے چاروں طرف اہل اللہ بدعت کی ظلمتوں کے خلاف دہائی دے رہیں اور مرد مومن شیدائی سنت بے محابا ان سے مخلصی چاہتا ہے یہ صرف مقام سنت ہے جس سے کرنیں پھوٹتی ہیں اور بدعتوں کی ظلمتیں ٹوٹتی ہیں۔یہ رسالہ طلباء، علماء سالکین اور مبلغین کے لیے بہت مفید اور صحیح معنی میں حامی سنت اور ماحی بدعت ہے۔ اللہ رب العزت اس تالیف لطیف کو اور مفید بنائے آمین


::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


اسلام اور جدت پسندی(Islam & Modernism)

By rahesunnat جدت پسندی بذات خود ایک مستحسن جذبہ اور انسان کی ایک فطری خواہش ہے، اگر یہ جذبہ نہ ہوتا تو انسان پتھر کے زمانے سے ایٹم کے دور تک نہ پہنچتا۔چنانچہ اسلام نے جو ایک فطری دین ہے، کسی جدت پر بحیثیت جدت کے کوئی پابندی عائد نہیں کی، بسا اوقات اسے مستحسن قرار دیا ہے اور اس کی ہمت افزائی کی ہے۔لیکن یہ بھی اپنی جگہ حقیقت ہے کہ جس طرح جدت پسندی نے انسان کو مادی ترقی کے بام عروج تک پہنچایا ہے، اسی طرح اس نے انسان کو بہت سے نفسانی امراض میں بھی مبتلا کیا ہے اور بہت سے تباہ کن نقصانات بھی پہنچائے ہیں۔اس سے معلوم ہوا کہ جدت پسندی ایک دو دھاری تلوار ہے جو انسانیت کو فائدہ پہنچانے کے کام بھی آسکتی ہے اور اس کا کام تمام بھی کر سکتی ہے۔لہذا ایک جدید چیز نہ محض نئی ہونے کی بناءپر قابل قبول ہے اور نہ محض نئی ہونے کی بناءپر قابل تردید ۔
اس کے بعد سب سے اہم سوال یہ ہے کہ وہ کیا معیار ہے جس کی بنیاد پر یہ فیصلہ کیا جاسکے کہ فلاں جدت مفید اور قابل قبول ہے اور فلاں مضر اور ناقابل قبول؟
مولف نے اس کتاب میں اسی حد کی نشاندہی کی ہے، جس کی روشنی میں یہ فیصلہ باآسانی کیا جا سکتا ہے کہ کونسی جدت قابل قبول ہے اور کونسی نا قابل قبول۔ اﷲ ہم سب کو صراط مستقیم پر استقامت عطا فرمائے۔ آمین


:::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Arbaeen Salat-o-Salam (اربعین صلواہ و سلام)

November 2, 2008 یہ خوبصورت گلدستہ”اربعین صلوہ و سلام” صلوات وسلام پر مشتمل ہے جس میں وہ صیغے جو صلوات وسلام کے احادیث میں آءے ہیں ان میں سے ۴۰صیغے شامل ہیں۔ہمیں چاہیے کہ ہم روزانہ ان چالیس احادیث شریفہ کو پڑھ کر درود و سلام کے فیوض و برکات سے مستفیض ہوں۔اللہ کریم توفیق عطا فرماءیں۔آمین


::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Durood Sharif ka Sharai Tariqa(درود شریف پڑھنے کا شرعی طریقہ)

November 2, 2008
قرآن کریم اور حدیث شریف سے درود شریف ؛دعار اور ذکر کی اہمیت اور فضیلت بیان کی گءی ہے اور ٹھوس تاریخی حوالوں سے ثابت کیا گیا ہے کہ اذان سے پہلے اور بعد بلند آواز کے ساتھ درود شریف پڑھنے کا خیرالقرون میں کہیں وجود نہیں تھا۔اللہ تعالی مسلمانوں کو سنت پر عمل پیرا ہونے کی توفیق مرحمت فرماءے۔آمین
In this Book, the author emphasize the importance and need of Durood Sharif and Adhkar in the light of Quran and Ahadith (Ahadees). It was also proved by the authentic historical proof that durood recited in the begining and end of Azan, was not exist in early eras of Islam.


::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Zaad-as-Saeed(ذادالسعید)

November 2, 2008
یہ خوبصورت گلدستہ”ذادالسعید” صلوات وسلام پر مشتمل ہے جس میں وہ صیغے جو صلوات وسلام کے احادیث میں آءے ہیں ان میں سے ۴۰صیغے شامل ہیں۔جن میں پچیس ۲۵صیغے صلوات کے ہیں اور پندرہ۱۵ سلام کے ہیں۔گویا یہ مجموعہ درود شریف کی چہل حدیث ہے۔
The beautiful collection of Salat and Salam, which actually comprises of Forty Ahadees. Twenty Five are based on Salat and Fifteen are based on Salam.


:::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Khutbat-e-Hajjat-ul-Wida(خطبات حجہ الوداع)

October 16, 2008
ہمارے پیارے نبی حضرت محمد نے ہجرت کے بعد پہلا اورآخری حج ادا فرمایا تھا۔ اورآپکی یہ کوشش تھی کہ امت کے اس منتخب مجمع کو وہ نصیحتیں کردو جو میرے بعد قیامت تک انکی رہبری کریں۔ اسی لیے خاص حج کے ارکان و افعال سکھانے کے ساتھ مختلف مواقع پر ایسے خطبے دیے اور ایسی نصیحتیں فرماءیں۔ ان تمام خطبات اورنصاءح کو اس مختصر رسالے میں جمع کرنے کی سع کی گءی ہے۔
Our Holy Prophet Muhammad SAW performed one and only Haj of His life after Hijra. On that auspicious occasion, our Prophet Muhammad SAW taught the Sahaba all acts of Haj and also given important advices, so that they would be able to lead us and the muslims of all times. In this brief booklet, author collected all those advices and speeches (Khutbat).


::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Aurat ka Bila-Mehram Safar-e-Haj(عورت کا بلا محرم سفر حج)

October 16, 2008

حج اسلام کا بنیادی رکن ہے اور ہر صاحب نساب مسلمان پر فرض ہے جس میں بلا ضروری تاخیر باعث عذاب ہے۔ اس رسالہ میں مولف نے عورتوں کے بلامحرم سفر حج کے متعلقات و مساءل کو بخوبی بیان کیا ہے اور اس میں تمام فقہاء کرام کے مذاہب کا احاطہ کیا ہے۔چونکہ یہ کتاب عورتوں کے لیے مخصوص ہے لہذا اس میں خواتین کے دیگر مساءل کا بھی احاطہ کیا گیا ہے۔
This Booklet explains the women visit for Haj without Sharia Permitted Male Companion (Mehram). In this regard, the author illustrated all four Fuqahas point view and also included other specific problems of women in this brief booklet. Right click Title image and choose “Save Target As” to download.


::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Al-Kalam-ul-Havi (الکلام الحاوی فی تحقیق عبارت الطحاوی)

May 22, 2009
Klm_Hvi
زیر نظر رسالہ میں مولف نے تحقیق اور جستجوسے صحیح احادیث؛ حضرات صحابہ کرام؛ تابعین؛ اءمہ اربعہ اور مختلف مکاتیب فکر کے جمہور فقہاء کرام سے باحوالہ یہ ثابت کیا ہے کہ سادات کے لیےژکوہ ؛ عشر؛ نذر اور اسی طرح کے واجب قسم کا کوءی بھی صدقہ جاءز نہیں اور جن حضرات کو حضرت امام طحاوی کی جس عبارت سے جواز کا شبہ ہوا ہے اس کو خوب واضح کیا گیا ہے کہ وہ ہرگز جواز کے قاءل نہیں ہیں نیز دیگر کءی ضمنی اور علمی و تحقیقی ابحاث ہیں جو صرف پڑھنے سے تعلق رکھتی ہیں۔انشاء العزیز یہ کتاب حکومت اور عوام سب کے لیے مشعل راہ ثابت ہو سکتی ہے تاکہ ذکواہ اور صدقات واجبہ کو اسی طریقے سے ادا کریں اور وصول کریں جس طریقہ سے شریعت نے حد بندی کی ہے تاکہ ذکواہ وغیرھا دینے والوں کا ذمہ بھی فارغ ہو سکے اور لینے والے بھی حرامخوری سے محفوظ رہیں۔ اللہ تعالی سب کو صحیح دین پر چلنے کی توفیق نصیب فرماءے۔ آمین ثم آمین


::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Zakat ke Masail Encyclopedia (زکواہ کے مساءل کا انساءیکلوپیڈیا)

May 20, 2009
Zkt_Enc
زکوہ اسلام کے پانچ ارکان میں سے ایک رکن ہے؛ صاحب نصاب لوگوں کے لیے سالانہ ڈھاءی فیصد بطور زکوہ نکالنا فرض ہے؛ زکوہ نکالنے سے باقی ساڑھے ستانوے فیصد مال پاک ہو جاتا ہے اور اللہ کی طرف سے اس مال کی حفاظت ہوتی ہے اور غریبوں کے گھر آبادرہتے ہیں۔مجتہدین کرام کو شریعت کی تدوین و تاسیس کا شرف حاصل ہے تو متاخرین کو تسہیل و ترتیب؛ تہذیب و تنقیح اور توسیع؛ تاکید و تلخیص کی فضیلت حاصل ہے۔ آج کے علماء کا امت پر بڑا احسان ہے کہ وہ اسلاف کے علمی جواہر پاروں کو امت کے سامنے ان کے مزاج اور ذوق کے مطابق پیش کردیں۔ اس خدمت کا احساس کرتے ہوءے محترم محمد انعام الحق صاحب نے زکوہ سے متعلق فقہی مساءل کو حروف تہجی کے حساب سے آسان اور سہل انداز میں ترتیب دیا ہے؛ جس کی وجہ سے عوام الناس کو انہیں تلاش کرنے میں آسانی ہوءی ہے۔اللہ تبارک وتعالی ان کی سعی کو قبول فرماءیں اور ہم سب کی نجات کا ذریعہ بناءے۔ آمین


::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Murawwaja Qaza-e-Umri Bidat h (مروجہ قضاءے عمری بدعت ہے)

May 30, 2009
Qaz_Umr
بعض لوگ رمضان المبارک کے آخری جمعہ میں ایک نماز یا پانچ نمازیں اس نیت سے پڑھتے ہیں کہ اس سے تمام فوت شدہ نمازوں کی قضاء ہو جاتی ہے اور اس کو قضاء عمری کہتے ہیں۔ اسی طرح بعض لوگ جمعہ الوداع کے دن الوداع الوداع اے رمضان الوداع جیسے کلمات کہتے ہیں ۔ اس رسالہ میں ثابت کیا گیا ہے کہ قضاء عمری کا یہ طریق بدعت اور ان جیسے کلمات کا شریعت سے کوءی ثبوت نہیں ہے۔ نیز اس رسالہ میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ کس طبقہ کے فقہاء اور کن کتابوں سے فتوی دینا جاءز اور کن سے فتوی دینا ناجاءز ہے؛ اور موضوع احادیث کی بعض علامات بتاءی گءی ہیں۔ اور غیر مفتی بہ قول سے گریز اور سنت پر عمل کرنے کی تلقین کی گءی ہے۔


::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Wudhu Durust Kijiye (وضو درست کیجیے)

January 1, 2009
wud_drsقرآن و حدیث میں وارد نماز کے برکات و ثمرات آجکل نہیں حاصل ہو پاتے جسکی بہت سی وجوہات ہیں جن میں سے ایک بڑی وجہ وضو کا ناقص اور خلاف سنت ہونا ہے۔ عجلت؛ غفلت؛ سستی اور لاعلمی میں آداب اور سنتوں کا خیال ہی نہیں رہتا۔ اس کوتاہی میں بعض اچھے خاصے دین دار اور پنج وقتہ نمازی بھی مبتلا نظر آتے ہیں۔ اس کوتاہی کو دور کرنے کے لیے یہ کتابچہ تحریر کیا گیا ہے۔ اس مختصر رسالہ میں وضو کے چند فضاءل ؛ فراءض؛ سنتیں؛مستحبات؛ اور وضو کا مسنون طریقہ اور بعض ضروری مساءل کھے گءے ہیں۔ اللہ تعالی ہم سب کو سنت کے مطابق وضو کرنے اور نماز پڑھنے کی توفیق عطافرماءے آمین


 ::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Aao Namaz Sekhain (آونماز سیکھیں)

January 1, 2009
nmz_sknنماز دین کا اہم ستون ہے؛ اور اس فریضہ کی اہمیت پر کس قدر توجہ دلاءی گءی ہے اس سے سبھی مسلمان واقف ہیں۔آجکل اچھے خاصے تعلیم یافتہ لوگوں سے نماز کے مسنون طریقے میں کوتاہی ہو جاتی ہے؛ اور بچے بھی چونکہ بڑوں کی دیکھا دیکھی نماز پڑھتے ہیں اس لیے وہ بھی مسنون طریقہ نہیں سیکھ پاتے۔ اس کتاب کا بنیادی مقصد بچوں کو نماز کا مسنون طریقہ سکھاناہے اس لیے اس میں نماز کے ارکان کے طریقہ پر ہی زور دیا گیا ہے؛ البتہ آخر میں نماز سے متعلق کچھ ضروری تفصیل بھی دے دی گءی ہے۔ نماز کےافعال کی مزید وضاحت کے لیے ممکنہ حد تک تصویری خاکے بھی دیے گءے ہیں۔دعا ہے کہ اللہ تعالی اس کتاب کو شرف قبولیت عطا فرماءیں اور بچوں اور بڑوں کے لیے مفید بناءیں۔ آمین ثم آمین


:::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Khwateen-e-Islam ki Behtreen Masjid(خواتین اسلام کی بہترین مسجد)

October 16, 2008
ماضی قریب میں خواتین اسلام کی مسجد میں حاضری کا موضوع زیر بحث رہااور عوام میں شکوک و شبہات پیدا کرنے کی کوشش کی گءی؛ جسکی بنیاد پر مولف نے یہ رسالہ تالیف فرمایا اس بات کا بخوبی اہتمام فرمایا کہ اس رسالہ میں وہ تمام ابحاث شامل ہو جاءیں جسکی بنیاد پر مسءلہ کی وضاحت ہو جاءے اور ایک عام قاری کے تمام شکوک رفع ہو جاءیں۔
This booklet is aimed at to elaborate in the light of authentic evidences the issue of Bringing Muslim Women into Mosque, which in this era of immodesty, extremely against of Sharia Islami. The author has dealt excellently the topic and may answer all the confusions.


:::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Namaz me Khwateen ki Ghaflatein(نماز میں خواتین کی غفلتیں)

October 16, 2008
مولف رسالہ نے اس مختصر رسالہ میں دور حاضر میں ہماری خواتین میں پاءی جانےوالی نمازکے متعلق ساتھ غفلتوں کا احاطہ کیا ہے۔ دعا ہے کہ اللہ ہمیں ان غلطیوں کو دور کرنے اور آءندہ ان سے اجتناب کی توفیق عطا فرماءے۔ آمین
In this brief booklet, the author RA pointed out Seven Mistakes committed by our women in their Namaz (Salat). May Allah JS bless the courage to imporve those mistakes and prevent our Namaz (Salat) from them. Right Click Title image and choose “Save Target As” to download.


::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::

Masnoon Namaz ki Chahal Hadees(مسنون نماز کی چہل حدیث)

October 16, 2008
مسنون نماز کی چالیس احادیث کو خوبصورت مجموعہ۔
Excellent Collection of Forty Ahadees-e-Mubaraka relating the Namaz (Salat) according to the Sunnah.




:::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Humara Maashi Nizam (ہمارا معاشی نظام)

June 12, 2010
عصر حاضر میں اسلام کے عملی نفاذ اور زندگی کے مختلف شعبوں میں نت نئے پیدا ہونے والے مسائل کے اسلامی حل کی جستجو ہر ایک کو ہے، اس ضمن میں ایک اہم ترین جز معاشی نظام بھی ہے۔زیر نظر کتاب کے مولف مولانا مفتی محمد تقی عثمانی صاحب کسی تعارف کے محتاج نہیں، اور اس کتاب میں انہوں نے اسلامی نظام کی معاشی اصطلاحات، علماءکا متفقہ معاشی خاکہ، ہمارے معاشی مسائل اور ان کے حل کی مختلف تجاویز، اسلام کا موازنہ سوشلزم اور جمہوریت جیسے اہم موضوعات کی وضاحت کی ہے۔ نیز زرعی اصلاحات اور سود اور بینکنگ اور اس کے متبادل مشارکہ اسکیم وغیرہ کا بھی خاکہ پیش کیا ہے۔اللہ تعالی سے دعا ہے کہ وہ اس کو مسلمانوں کے لئے مفید بنائیں اور مولف اور اشاعت میں تعاون کرنے والے حضرات کے لئے ذخیرہ آخرت ثابت ہو۔آمین


 :::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::;

Islamic Banking 1 Jaiza (اسلامی بینکاری ایک حقیقت پسندانہ جاءزہ)

October 27, 2008
غیر سودی بینکاری کے متعارف کردہ نظام کو جہاں عالم اسلام کے علماء فقہاء اور عامت المسلمین میں غیر معمولی پذیراءی حاصل ہوءی ؛وہاں بعض حلقوں کی طرف سے تنقید بھی کی جا رہی ہے۔زیر نظر کتاب میں کوشش کی گءی ہے کہ جو علمی شبہات کے ازالے کے لیے یہ مختصر مگر جامع تحریر مرتب کی ہے جس میں اسلامی بینکاری کا حقیقت پسندانہ جاءزہ لیا گیا ہے۔ امید ہے کہ اس تحریر سے شبہات کا ازالہ ہوگا اور عملی طور پر اسلامی بینکاری جن مراحل سے گذر رہی ہے اس کی صحیح حقیقت بھی ان کے سامنے آءیگی۔
The Emerging Islamic Banking System (Interest Free) is capturing market and is greatly admired by the Ulamas, Fuqahas and common muslim community. Besides its popularity, few communities have made it target of criticism. This book is aimed to answer valid confusions found in the minds of people, and present a true analysis of Islamic Banking System, which is in its evolutionary period.


 :::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Daur-e-Hazir k Fitnay (دور حاضر کے فتنے اور ان کا علاج)

May 18, 2009
fit_Iljعصرحاضر میں دنیاءے اسلام کے گوشے گوشے میں فتنوں کا ایک سیلاب امڈ آیا ہے ۔ علمی عملی دینی اخلاقی معاشرتی اور تمدنی اتنے فتنے ظاہر ہو چکے ہیں کہ عقل حیران ہے ۔ دنیا بھر میں مسلمان ”مغربیت”کے سیلاب بہہ چکے ہیں۔ خیالات افکار نظریات احساسات سب ہی میں یورپ کا چربہ اتارا جانے لگا ہے۔یہ کتاب دراصل مولانا سید محمد یوسف بنوری نوراللہ مرقدہ کے تحقیقی علمی اور حکیمانہ مقالات کا مجموعہ میں جس میں مولانا ممدوح نے بصیرت اور دور اندیشی سے پچیس تیس سال قبل ان فتنوں کی طرف توجہ دلاءی تھی جو آج حرف بہ حرف مشاہدہ میں ہے۔ اللہ تبارک وتعالی سے دعا ہے کہ اس مجموعہ کو مولانا ممدوح کے لیے صدقہ جاریہ پڑھنے والوں کے لیے ہدایت کا ذریعہ ہدایت اور مرتب کے لیے توشہ آخرت بناءے۔ آمین


:::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


بدعت اور اہل بدعت اسلام کی نظر میں(Bidat aur Ahl-e-Bidat Islam ki Nazar Me)

December 22, 2010
زیر نظر کتاب میں مولف نے بڑی ہمت اور محنت شاقہ سے بدعت کے بارے میں حضرات صحابہ کرام، تابعین عظام، مجتہدین کرام، مجددین امت اور اولیاء اللہ کے اقوال کو جمع فرمایا ہے۔ یہ سب مضامین مختلف اسفار میں منتشر تھے، آپ نے انہیں یکجا کر کے ایک نہایت مفید ترتیب دی ہے۔ قاری کو ایک ایسے محل میں لاکھڑا کیا ہے جس کے چاروں طرف اہل اللہ بدعت کی ظلمتوں کے خلاف دہائی دے رہیں اور مرد مومن شیدائی سنت بے محابا ان سے مخلصی چاہتا ہے یہ صرف مقام سنت ہے جس سے کرنیں پھوٹتی ہیں اور بدعتوں کی ظلمتیں ٹوٹتی ہیں۔یہ رسالہ طلباء، علماء سالکین اور مبلغین کے لیے بہت مفید اور صحیح معنی میں حامی سنت اور ماحی بدعت ہے۔ اللہ رب العزت اس تالیف لطیف کو اور مفید بنائے آمین


::::::::::::::::::::::::::::::::::::::




تاریخ میلاد (Tareekh-e-Meelad)

February 22, 2010

خیر القرون کے بعد ہر دور میں دین کا چہرہ مسخ کرنے اور اپنی خواہشات کو پورا کرنے کے لیے اہل باطل دین میں نئی نئی اختراعات کا اضافہ کرتے رہے ہیں اوررد عمل کے طور پر اﷲ کے نیک بندے ان کی مذموم کوششوں کو خاک میں ملاتے رہے ہیں۔اسی طرز پر اسلام کی چھ صدیوں کے بعد چند نفس پرستوں نے آپ صلی اﷲ علیہ وسلم کے یوم پیدائش کی آڑ میں ایک بدعت اختراع کی اور نام مولود، میلاد رکھا جو بڑھتے بڑھتے عید میلاد اور جشن عید میلاد ہوگیا۔ ابتدا ءمیں یہ محض تذکرہ سیرت اور طعام تک محدود تھا لیکن ترقی کرتے کرتے اعتقادی اور عملی بدعات کا مجموعہ ہوچکا ہے۔ زیر نظر رسالہ کے مطالعہ سے ناظرین کو معلوم ہوگا کہ مروجہ مجلس میلاد کس صدی میں ایجاد ہوئی، کس نے ایجاد کی، کیوں ایجاد کی، سب سے پہلے اس پر کون سی کتاب لکھی گئی، اس مصنف کا مذہب کیا تھا پھر اس کے بعد اب تک اس میں کیا کیا تبدیلیاں اور ترقیاں ہوئی، ہر قرن کے علماءکرام نے اس کے متعلق کیا خیالات ظاہر فرمائے۔اللہ تعالی سے دعا ہے کہ ہمیں سچا پکا مسلمان بنائے اور نبی کی سنتوں پر عمل کی توفیق عطا فرمائے اور بدعات و خرافات سے اجتناب کرنے کی توفیق عطا فرمائے۔ آمین یا رب العالمین




::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Saat Masaail (سات مساءل)

January 19, 2009
sat_mslزیر نظر رسالہ میں مولف نے دین کے نام پر انجام دی جانیوالی چند بدعات و رسومات کا قرآن حدیث کی روشنی میں جاءزہ پیش کیا ہے۔ جن میں کونڈوں اور رجب کے روزہ کا حکم؛ شب معراج کے متعلق خدشات؛ شب برات اور اس کے متعلق شیعہ حضرات کی خباثت؛ نصف شعبان میں کیےجانےوالے ایصال ثواب اور ضعیف احادیث پر عمل کرنے کے مفاسد کا اصولی احاطہ کیا گیا ہے۔اللہ سے دعا ہے کہ ہر مسلمان کو سنت کے مطابق زندگی گذارنے کی توفیق عطا فرماءے۔آمین


:::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Maut k waqt ki Bidaat (موت کے وقت کی بدعات)

January 19, 2009
mot_bdtجناب رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کی تابعداری اور فرمانبرداری واجب ہے اور اسی میں مسلمانوں کی کامیابی ہے۔ لہذا خوشی کا موقع ہو یا غمی کا؛ ہر حالت میں ہر مسلمان مرد و عورت اس کا پابند ہے کہ وہ یہ علم حاصل کرے کہ اس موقع پر نبی پاک صلی اللہ علیہ وسلم کی کیا تعلیم اور ہدایت ہے۔ پھر جو کام کرنے کا آپ نے حکم دیا ہو اس کو بجا لاءے اور جس کام سے روکا ہو اس سے رک جاءے۔ اس اصولی ہدایت کی روشنی میں یہ عرض ہے کہ جب ہمارے یہاں کسی کا انتقال ہو جاتا ہے تو اس موقع پر ہم بہت سے کام ایسے کرتے ہیں جو شریعت اور سنت سے ثابت نہیں ہیں؛ ان کاموں سے بچنا ضروری ہے جو اور امور سرکار دو عالم صلی اللہ علیہ وسلم سے ثابت ہیں ان امور کو بجا لانا ضروری ہے۔ اللہ تعالی ہم سب کو دین کے تمام احکام پر عمل کرنے کی توفیق عطا فرماءے اور بدعات اور منکرات سے بچنے کی ہمت عطا فرماءے ۔آمین


::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Fateha ka Tareeqa (فاتحہ کا طریقہ)

January 19, 2009
tha_trqکسی بھی کام کے کرنے کا جو ثواب سنت میں بتاءے گءے طریقہ کے مطابق عمل میں ہے وہ اس سے ہٹ کے حاصل نہیں کیا جاسکتا۔ اور جو سنت میں بتاءے گءے طریقہ سے ہٹ کر کوءی فعل انجام دیگا تو وہ بدعت کا مرتکب ہوگا جو سراسر گمراہی اور دین میں تحریف کے معنوں میں ہے۔ جیسا کہ آجکل بہت سی خرافات دین کے نام پر مروج ہے؛ انہی میں ایک فاتحہ اور ایصال ثواب بھی ہے۔ زیر نظر رسالہ میں عوام الناس کی اصلاح کے لیے فاتحہ کا طریقہ سنت میں بتاءے گءے طریقہ کے مطابق سوالا جوابا پیش کیا گیا ہے تاکہ سمجھنے میں آسانی ہو اور اللہ سے دعا ہے کہ عمل کی توفیق نصیب ہو۔آمین


:::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::

Aisal-e-Sawab (ایصال ثواب)

January 18, 2009
esl_swbجمہور اہل اسلام کا اس پر اتفاق ہے کہ میت کے لءے ایصال ثواب درست اور جاءز ہے۔ خواہ بدنی عبادت ہو خواہ مالی۔زیر نظر کتابچہ ایصال ثواب کے مسءلہ کے بارے میں حضرت مولانا محمد منظور نعمانی؛ مولانا محمد سرفراز خان صفدر؛ اور مولانا امین صفدر اوکاڑوی کے افادات پر مشتمل ہے جس میں قرآن و سنت کی روشنی میں اس مسءلہ کی وضاحت کی گءی ہے۔دعا ہے کہ اللہ سبحانہ وتعالی قارءین کو اس متفقہ مسءلہ کے سمجھنے اور سنت کے مطابق عمل کی توفیق نصیب فرماویں۔آمین


:::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::

Ilm-e-Din aur Humary Bachchy (علم دین اور ہمارے بچے)

May 31, 2009
Ilm_Bchمغربی تہذیب و تمدن نے مسلمانوں کو چاروں طرف سے اپنے شکنجہ میں جکڑ لیا ہے جس سے بڑوں اور بچوں سب کی ذہنی تربیت (Brain Washing)ہو رہی ہے۔ مسلمان اپنی شناخت بھولتے جا رہے ہیں اور اکثریت کے دماغ پر مغربیت چھاءی جا رہی ہے۔ وقت کا تقاضہ یہ ہے کہ ہم اپنے بچوں کو دنیا کے ساتھ ساتھ دین کی طرف بھی راغب کریں اور یہ اسی وقت ممکن ہے جب ہم اپنے ننھے منے بچوں کے لیے ایسا ماحول اور نصاب فراہم کریں جس سے وہ اس حقیقت سے آشنا ہوں کہ ہم اس فانی دنیا میں کس لیے آءے ہیں؟ کیا کرنے آءے ہیں؟ اور کیا کر کے واپس جاءیں گے؟ اسی ضرورت کے پیش نظر یہ کتاب مرتب کی گءی ہے۔امید ہے کہ ابتداءی درجات میں اس نصاب کے پڑھانے سے معصوم بچے کسی قدر دینیات سے آگاہ ہو جاءیں گے اور بے دینی کے سیلاب سے بچاءوکی شکل پیدا ہوجاءے گی۔ اللہ تعالی اس کو نافع و مفید بناءے۔آمین




::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::

Mufti Mehmood Hassan aur Jama’at-e-Tableegh (مفتی محمود حسن گنگوہی اور تبلیغی جماعت)

March 9, 2009
mhm_tblزیر نظر کتاب میں مفتی اعظم ہند حضرت مفتی محمود حسن صاحب گنگوہی کے ملفوظات؛ مواعظ اور تفاوی سے تبلیغی جماعت سے متعلق مضامین جمع کیے گءے ہیں۔ اس کے پڑھنے سے انشاء اللہ تعالی تبلیغی کام کرنے والوں کو بھی بہت فاءدہ ہوگا۔ حضرت کے متعلقین اور عام مسلمانوں کو بھی فاءدہ کی امید ہے۔ حضرت کی شخصیت سے جو واقف ہے وہ اس کی اہمیت کو ضرور محسوس کریگا؛ اور اس سے تبلیغی کام کی افادیت بھی ظاہر ہوگی؛ جس سے کام میں لگنے کی امید ہے۔ واللہ الموفق



:::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Ilm aur Ulama ki Azmat (علم اور علماء کی عظمت)

January 19, 2009
ilm_azmزیر نظر رسالہ دراصل ایک وعظ ہے جو مولف نے علم دین اور علماء کرام کی عظمت قرآن پاک اور احادیث نبویہ صلی اللہ علیہ وسلم کی روشنی میں مدلل انداز میں پیش کی ہے۔ یہ وقت کی ایک اہم ضرورت کے تقاضے کا سد باب کرنے کے لیے کیا گیا وعظ ہے کیونکہ عوام میں جن میں اکثر دین دار لوگ بھی شامل ہیں علماء کرام کی اہانت اور تمسخر کا خطرناک رجحان نمو پا رہا ہے جس کی وجہ علماء کرام کے مرتبہ اور عظمت سے ناواقفیت ہے۔ انشاء اللہ یہ وعظ ان لوگوں کے لیے بھی مشعل راہ و ہدایت کا کام دے گا جو دین کا کام حدود شریعت کا لحاظ کیے بغیر کرتے ہیں۔ اللہ تعالی سے دعا ہے کہ وہ مولف کی ذات بابرکات کو مع صحت و عافیت تادیر ہمارے سروں پر سلامت رکھیں۔ اور امت کو اس وعظ سے استفادہ کی توفیق عطافرماءیں۔آمین یارب العالمین



::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::

Tableegh-e-Islam (تبلیغ اسلام)

October 31, 2008
زیر نظر کتاب میں قرآن کریم اورحدیث شریف کے روشن حوالوں سے امر بالمعروف اور نہی عن المنکر کی اہمیت؛صداقت؛اسلام؛ طریقہ تبلیغ؛ امت مرحومہ کی حق گوءی؛ جماعتی زندگی کا مفہوم؛مبلغین کا رتبہ؛ ایمان مفصل کی ضروری تشریح و غرض رسالت اور اس سلسلہ کے کءی دیگر اہم مساءل و احکام نہایت سلجھے ہوءے رنگ میں پیش کیے گءے ہیں۔یہ کتاب خالص تبلیغی اور اصلاحی جذبہ سے لکھی گءی ہے۔
In this brief Booklet, the importance of Tableegh (Preaching) emphasized in the light of Quran and Ahadees, further nature, method, responsibilities, and fundamentals of Islam, and related issues are discussed in a unique style.


::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::



Sharai Parda ki Haqeeqat (شرعی پردے کی حقیقت)

August 11, 2009
Prd_Hqtپردہ کا موضوع انتہائی اہم موضوع ہے اور اس سلسلہ میں کوتاہیاں بھی بہت زیادہ کی جاتی ہےں۔ عوام الناس تو درکنار دیندار اور اہل علم گھرانوں میں بھی اس معاملہ میں شدید تساہل اور غفلت برتی جاتی ہے ، اسلیے ضرورت اس امر کی ہے کہ احساس موضوع اجاگر کر کے مسلمانوں کو شرعی پردہ اور اس کے احکام کے بارے میں باخبر کر دیا جائے۔ مولف رسالہ نے اس موضوع پر قلم اٹھایا اور بہت سی مفید باتیں اس کتابچہ میں نقل فرمائی ہیں، امید ہے کہ اس سے قارئین کو دینی فائدہ پہنچے گا اور اس اہم مسئلہ پر عمل کرنے میں سہولت اور آسانی پیدا ہوگی۔ اﷲ تعالیٰ اس کتابچہ کو نافع اور مقبول بنائے اور مولف محترم کے لیے دارین کا ذخیرہ بنائے۔آمین


:::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Sharai Parda Kis se? (شرعی پردہ کس سے؟)

May 30, 2009
Prd_Kisپردہ اپنی مقررہ حدود کے ساتھ ایک شرعی حکم اور دینی ہدایت ہے جس کی بنیادیں کتاب و سنت ان کی فقہی تشریحات اور تعامل سلف میں قاءم ہیں اور وہ ان ہی بنیادو ں پر ہر دور میں بلا انقطاع امت مرحومہ کا معمول رہتا آرہا ہے۔ وہ کوءی فرضی یا اختراعی چیز نہیںجسے کسی فرد یا سوساءٹی نے ہنگامی مصالح کے تحت تجیز کر لیا ہو اور اس کے رواج پذیر ہوجانے سے مسلمانوں کے ماحول میں خواہ مخواہ شرعی حیثیت دیدی گءی ہو۔مگر ایک عرصہ سے یہ شرعی حکم افراط و تفریط کا شکار ہو گیا ہے جس سے عوام میں اسکی شرعی حیثیت اور بنیادی حقیقت مشتبہ ہو گءی ہے اور وہ مختلف شکوک و شبہات اور سوالات کی آماجگاہ بن کر رہ گیا ہے۔ زیر نظر رسالہ میں مولف نے قرآنی احکام کی روشنی میں مدلل اور سیر حاصل گفتگو کی ہے اور پردہ کس سے کرنا ہے۔اللہ سے دعا ہے کہ وہ اس رسالہ کو مولف کے لیے توشہ آخرت اور عوام الناس کیلیے ذریعہ ہدایت بناءے ۔آمین


:::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::




Sharai Parda (شرعی پردہ)

May 30, 2009
Prd_Tybپردہ اپنی مقررہ حدود کے ساتھ ایک شرعی حکم اور دینی ہدایت ہے جس کی بنیادیں کتاب و سنت ان کی فقہی تشریحات اور تعامل سلف میں قاءم ہیں اور وہ ان ہی بنیادو ں پر ہر دور میں بلا انقطاع امت مرحومہ کا معمول رہتا آرہا ہے۔ وہ کوءی فرضی یا اختراعی چیز نہیںجسے کسی فرد یا سوساءٹی نے ہنگامی مصالح کے تحت تجیز کر لیا ہو اور اس کے رواج پذیر ہوجانے سے مسلمانوں کے ماحول میں خواہ مخواہ شرعی حیثیت دیدی گءی ہو۔مگر ایک عرصہ سے یہ شرعی حکم افراط و تفریط کا شکار ہو گیا ہے جس سے عوام میں اسکی شرعی حیثیت اور بنیادی حقیقت مشتبہ ہو گءی ہے اور وہ مختلف شکوک و شبہات اور سوالات کی آماجگاہ بن کر رہ گیا ہے۔ زیر نظر رسالہ میں مولف نے اسلام کے نظام عفت و عصمت کا حسین مرقع پردہ کی ضرورت و اہمیت کا قرآن و حدیث سے ثبوت اور پردہ پر کیے جانیوالے اشکالات کا بہترین حل پیش کیا ہے۔ اللہ سے دعا ہے کہ وہ اس رسالہ کو مولف کے لیے توشہ آخرت اور عوام الناس کیلیے ذریعہ ہدایت بناءے ۔آمین


:::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Khwateen ki Zeb-o-Zeenat (

October 16, 2008
ترقی کی دوڑ میں جہاں دیگر نءی اشیاء ظہور پذیر ہو رہی ہیں وہیں آءے دن زیب و زینت سے متعلق نت نءے فیشن؛ ملبوسات وغیرہ بھی وجود میں آرہے ہیں۔ ضرورت اس بات کی تھی کہ زیب وزینت سے متعلق تمام احکامات کو یکجا کر کے اسلامی نقطہ نظر کو واضح کیا جاءے۔ اسی ضرورت کو مولف کتاب ھذا نے اپنی سعی سے پورا فرمادیا۔اللہ سے دعا ہے کہ اسے دنیا و آخرت میں کامیابی کا ذریعہ بناءے۔ آمین
In this era of Science and Technology, and changing world day by day, everything is changing accordingly, creating numerous questions. One of them is Beautification of Muslim Women and their limits to adapt new era fashions. It was wished for long that a book should be availbe to guide our muslims sisters to guide them at what extent they can adopt the fashion. The author felt the necessity of such book now it is available. May Allah JS accept this act of author and May Bless him in this world and here after.


::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


فقہ ولی اللّٰہی خدمات و اثرات و ثمرات(Fiqah Wali-ul-Lahi Khidmat wa Asraat wa Samrat)

December 22, 2010
برصغیر ہندو پاک کی تاریخ میں حضرت شاہ ولی اﷲکی شخصیت مرکز ثقل کی حیثیت رکھتی ہے۔ اس حقیقت سے انکار نہیں کہ حضرت شاہ ولی اﷲمحدث دہلوی سے پہلے بھی برصغیر میں ہر علم و فن کی بڑی بڑی شخصیتیں پیدا ہوئیں اور انہوں نے اپنے روشن کارناموں سے برصغیر کی عظمت میں چار چاند لگائے اور حضرت شاہ ولی اﷲکے بعد بھی بلند قامت شخصیتوں کا یہ سلسلہ جاری رہا۔ برصغیر ہی نہیں پوری دنیا میں مسلمانوں پر برصغیر کی سرزمین سے اٹھنے اور یہاں پروان چڑھنے والی شخصیات کے احسانات رہے۔ لیکن حضرت شاہ ولی اﷲ کی جامعیت و آفاقیت ان کا اعتدال و توازن ان کے فکر کی گہرائی اور رسائی ان کی افراد سازی کی نظیر برصغیر کی تاریخ میں بہت مشکل سے ملے گی۔حضرت نے یہ بات محسوس کی کہ ایک طبقہ تقلید جامد میں غلو کر رہا ہے اور اس کے رد عمل میں امت میں ایک طبقہ ایسا پیدا ہور ہا ہے جو سرے سے تقلید کا انکار کرتا ہے اور عامۃ الناس کے لیے بھی تقلید کو حرام کرتا ہے ، حضرت شاہ ولی اللہ نے راہ اعتدال بتانے کی کوشش کی اور امت کے مختلف گروہوں کو علمی و فقہی طور پر ایکد وسرے سے قریب لانے اور ایک دوسرے کے بارے میں حسن ظن پیدا کرنے کے لیے اپنی علمی و فکری توانائیاں صرف کردیں۔ ہر طبقہ میں پائی جانے والی بے اعتدالیوں کی نشاندہی اور ہر طبقہ کو اس کی ذمہ داریاں یاد دلائی۔اس کا نتیجہ یہ ہوا کہ ہر طبقہ نے اپنا انتساب حضر ت کے ساتھ جوڑنا شروع کر دیا اور جس راہ عمل کی نشاندہی کی تھی اس پر عمل کرنے کے بجائے حضرت کی شخصیت پرتنازعہ شروع کر دیا۔زیر نظر رسالہ میں اس کشمکش کو حل کرنے کی کامیاب کوشش کی گئی ہے۔ اللہ سے دعاہے کہ ہماری رہنمائی فرمائے ۔ آمین


:::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


شاہ اسماعیل شہید دہلوی (Shah Ismail Shaeed Dehlvi)

December 21, 2010

پاک ہند کی تحریک آزادی کن تیرہ و تاریک راہوں سے گزر کر منزل سے ہمکنار ہوئی اور علمائے اسلام کہاں کہاں دریائے خون میں تیرے ان واقعات کی یاد سے ہماری تاریخ میں تسلسل پیدا ہوتا ہے اور مضمحل رگوں میں تازہ خون کی لہر اٹھتی ہے ہم ذرا ماضی کی طرف پلٹیں تو بہتر سے بہتر مستقبل کی تعمیر کر سکتے ہیں۔ اس تحریک کے سابقین اولین فکری طور پر حضرت امام شاہ ولی اﷲاور حضرت شاہ عبدالعزیز اور عملی طور پر ان کے خلفاء حضرت سید احمد شہید اور حضرت مولانا اسماعیل شہید تھے۔ ان شہیدوں نے سرزمین ہند میں قربانیوں کی ابتداء کی ملت ابراہیم کو اپنے پہلے اسماعیل پر بھی ناز ہے اور پچھلے اسماعیل کی قربانی پر بھی۔تحریک آزادی نے آئندہ بھی مختلف کروٹیں لیں لیکن اس حقیقت سے انکار نہیں کیا جاسکتا کہ تحریک آزادی کے خاکے میں پہلا رنگ شہدائے بالاکوٹ کے خون نے بھراتھا۔
حضرت مولانا اسماعیل شہید کو بدنام کرنے میں بیرونی سامراج نے کوئی کمی نہیں کی جدید نسلوں کو اپنے ماضی سے کاٹنے کے لیے ان حضرات کے خلاف تفرقے کے سائے اس بھیانک انداز میں پھیلائے گئے کہ ملت خواہ مخواہ دو حصوں میں بٹ گئی۔ یہ مختصر رسالہ اس سلسلہ کی کڑی ہےیہ اہل حق کا دفاع ہے اور محدثین دہلی سے تاریخی وابستگی کی ایک حسین یاد ہے ۔ اسوقت پاکستان میں اور بیرون پاکستان فریب خوردہ واعظوں کی ایک لمبی قطار لگی ہے، جو شب و روز مولانا اسماعیل شہید کے خلاف گستاخی رسول کا لاوا اگلتے ہیں اور اس ذوق تکفیر میں ان کے پینے پلانے کے جام چھلکتے ہیں۔تاریخ کو مسخ کرنے کے اس جاہلانہ شوق پر جس قدر افسوس کیا جائے کم ہے۔حضرت مولانا اسماعیل شہید کے خلاف جو جو الزامات سے تصنیف کئے گئے ہیں ان تفصیلی جواب کے لیے بہت سی جزئیات خود مولانا شہید کی تحریرات سے ہی پیش کی گئی ہیں۔ 
پاک ہند کی تحریک آزادی کن تیرہ و تاریک راہوں سے گزر کر منزل سے ہمکنار ہوئی اور علمائے اسلام کہاں کہاں دریائے خون میں تیرے ان واقعات کی یاد سے ہماری تاریخ میں تسلسل پیدا ہوتا ہے اور مضمحل رگوں میں تازہ خون کی لہر اٹھتی ہے ہم ذرا ماضی کی طرف پلٹیں تو بہتر سے بہتر مستقبل کی تعمیر کر سکتے ہیں۔ اس تحریک کے سابقین اولین فکری طور پر حضرت امام شاہ ولی اﷲاور حضرت شاہ عبدالعزیز اور عملی طور پر ان کے خلفاء حضرت سید احمد شہید اور حضرت مولانا اسماعیل شہید تھے۔ ان شہیدوں نے سرزمین ہند میں قربانیوں کی ابتداء کی ملت ابراہیم کو اپنے پہلے اسماعیل پر بھی ناز ہے اور پچھلے اسماعیل کی قربانی پر بھی۔تحریک آزادی نے آئندہ بھی مختلف کروٹیں لیں لیکن اس حقیقت سے انکار نہیں کیا جاسکتا کہ تحریک آزادی کے خاکے میں پہلا رنگ شہدائے بالاکوٹ کے خون نے بھراتھا۔
حضرت مولانا اسماعیل شہید کو بدنام کرنے میں بیرونی سامراج نے کوئی کمی نہیں کی جدید نسلوں کو اپنے ماضی سے کاٹنے کے لیے ان حضرات کے خلاف تفرقے کے سائے اس بھیانک انداز میں پھیلائے گئے کہ ملت خواہ مخواہ دو حصوں میں بٹ گئی۔ یہ مختصر رسالہ اس سلسلہ کی کڑی ہےیہ اہل حق کا دفاع ہے اور محدثین دہلی سے تاریخی وابستگی کی ایک حسین یاد ہے ۔ اسوقت پاکستان میں اور بیرون پاکستان فریب خوردہ واعظوں کی ایک لمبی قطار لگی ہے، جو شب و روز مولانا اسماعیل شہید کے خلاف گستاخی رسول کا لاوا اگلتے ہیں اور اس ذوق تکفیر میں ان کے پینے پلانے کے جام چھلکتے ہیں۔تاریخ کو مسخ کرنے کے اس جاہلانہ شوق پر جس قدر افسوس کیا جائے کم ہے۔حضرت مولانا اسماعیل شہید کے خلاف جو جو الزامات سے تصنیف کئے گئے ہیں ان تفصیلی جواب کے لیے بہت سی جزئیات خود مولانا شہید کی تحریرات سے ہی پیش کی گئی ہیں۔




:::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


حضرت نانوتوی کی خدمات ختم نبوت (Hazrat Nanotvi ki Khidmat-e-Khatm-e-Nabuwwat)

November 24, 2010

ختم نبوت کے عظیم اور اہم عنوان پر حضرت نانوتوی نے اپنی کتب میں بہت سے مقامات پر کلام فرمایا ہے اور خاص اس موضوع پر تحذیر الناس بھی تحریر فرمائی ہے۔ یہ عالی قدر مضامین حضرت اقدس کی مختلف کتب و رسائل میں منتشر تھے جناب مولف نے سب کو ایک لڑی میں پرو کر بڑی خدمت انجاد دی ہے۔ کتاب سے واضح ہو جائیگا کہ عقیدہ ختم نبوت کے تحفظ کے لئے حضرت اقدس نانوتوی کی خدمات برصغیر کی تاریخ میں اساس اور بنیاد کی حیثیت رکھتی ہیں ، اؔٓپ کے بعد اس موضوع پر جو کچھ لکھا گیا اور جو خدمات سر انجاد دی گئیں وہ سب آپ کی مرہون منت ہیں۔دعا ہے کہ اللہ تعالی ہمیں بھی اکابر کے ساتھ جوڑے رکھے۔آمین


:::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


مقام صحابہ رضی اللہ تعالی عنھم (Maqam-e-Sahaba)

November 15, 2010

مولانا مفتی محمد شفیع عثمانی رحمۃ اللہ علیہ کی یہ کتاب ایک ایسے موضوع پر لکھی گئی ہے جو ہمارے زمانے میں عرصہ سے معرکہ بحث و جدال بنا ہوا ہے۔ اہل تشیع اور اہل سنت کے علاوہ خود اہل سنت کے مختلف گروہوں نے اس میں افراط و تفریط اختیار کی ہوئی ہے اور مستشرقانہ تحقیق کی وبائے عام نےاس میں اور شدت پیدا کی ہے۔ حضرت مفتی صاحب نے اپنے مخصوص انداز میں اس موضوع پر محققانہ اور ناصحانہ گفتگو کی ہے، اور مسئلے کے ایسے ایسے پہلووں پر روشنی ڈالی ہے جن میں وہ شاید اب تک منفرد ہیں۔اس کتاب میں آپ کو علم ،عقل اور عشق کا وہ حسین امتزاج ملے گا جو اہل سنت کی نمایاں خصوصیت ہے، اور امید ہے کہ انشاء اللہ یہ کتاب دلوں سے شکوک و شبہات کے بہت سے کانٹے نکال دے گی، واللہ الموفق والمعین


::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Imam Abu Hanifa ki Tabiat(امام ابوحنیفہ کی تابعیت)

May 29, 2010

حضرت امام رحمة اﷲ علیہ ائمہ اربعہ میں ایک خاص ممتاز اور منفرد حیثیت کے حامل ہیں جس کی وجہ ان کی وہ خصوصیات اور امتیازات ہیں جو دوسرے ائمہ میں نہیں پائے جاتے، اور انہیں خصوصیات کی بناءپر آپ کو امام اعظم کے لقب سے ملقب کیا جاتا ہے۔اور اہل علم اس حقیقت کو خوب جانتے ہیں کہ اسلامی دنیا کی اکثریت فقہی احکام میں امام اعظم کی پیرو ہے۔ امام صاحب کو اللہ تعالیٰ نے بہت سی خصوصیات سے نوازا تھا ان میں سے ایک اہم خصوصیت ان کی تابعیت ہے، یہ وہ خصوصیت ہے جس میں ائمہ مذاہب اربعہ میں امام اعظم ابو حنیفہ ہی یکتا و منفرد ہیں ، یہ کتاب اس موضوع پرنہایت جامع اور قیمتی معلومات پر مشتمل ہے جس سے اردو زبان کا دامن خالی تھا۔اس کتاب کے چند اہم مباحث حسب ذیل ہیں: تابعیت کیا؟ امام حنیفہ نے کن کن صحابہ کا زمانہ پایا؟ کن حضرات صحابہ سے آپ کو شرف ملاقات حاصل ہے؟ کن حضرات صحابہ سے آپ کی روایت ثابت ہے؟
ہماری دعا ہے کہ حق تعالیٰ شانہ حضرت امام اعظم کے طفیل اس کوشش کو شرف قبولیت سے نوازے اور ہمیں ان کی برکت سے سرفراز کرے۔آمین


:::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Shahadat-e-Hussain wa Kirdar-e-Yazeed (شہادت حسین رضی اللہ تعالی عنہ و کرداریزید)

December 7, 2009

پاکستان میں اہل سنت والجماعت کی غفلت اور ناواقفیت کی وجہ سے شیعیت وغیرہ دوسرے فتنوں کے ساتھ خارجیت بعنوان یزیدیت کا فتنہ بھی پھیل رہا ہے جس میں عوام الناس مبتلا ہو رہے ہیں۔زیر نظر رسالہ دراصل اسی خارجیت کی تردید میں اہل سنت والجماعت کے موقف کی تائید و ترویج کی ایک کاوش ہے جو دراصل حجة الاسلام استاذ الاساتذہ حضرت مولانا محمد قاسم نانوتوی رحمہ اللہ تعالی کا ایک مکتوب ہے۔حضرت نانوتوی قدس سرہ ¾ نے اس مکتوب گرامی میں شہادت امام حسین رضی اللہ تعالی عنہ پر مجتہدانہ بحث فرمائی ہے اور یہ بھی ثابت فرمایا ہے کہ یزید کے کردار میں سیدنا امیر معاویہ رضی اللہ تعالی عنہ کا دامن بالکل پاک ہے اور ان پر کوئی اعتراض نہیں آسکتا۔کچھ لوگ شیعیت کی تردید میں افراط و تفریط میں مبتلاہیں اور اہل سنت والجماعت کے اجماعی مسلک سے منحرف ہوئے ہےں۔ حق تعالی ہم سب کو مذہب اہلسنت والجماعت کی اتباع، خدمت اور نصرت کی ہمیشہ توفیق عطا فرمائے آمین بجاہ امام الانبیاءوالمرسلین صلی اللہ علیہ وسلم۔


::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Ulama-e-Deoband Muaasireen ki Nazar me (علمائے دیوبند معاصرین کی نظر میں)

August 10, 2009
Ulm_Nzr
فرنگی سامراج نے اسلامی عقائد و نظریات میں کفر و شرک کی آمیزش کیلئے علماءو مشائخ کے مقدس روپ میں ایسے ایجنٹ تیار کیے جو قرآن و حدیث کی ایسی غلط تعبیرو تشریح کریں جس سے اسلام اور کفر میں فرق نظر نہ آئے اور انگریز کے خلاف جہاد کے عنوان سے شروع ہونے والی تحریک آزادی کو توڑا جاسکے۔ یہی سلسلہ تاحال جاری ہے، اور روز بروز نئے نئے اسکالرز اور مشائخ اس حکمت عملی کا حصہ بن کر اسلام کے نام پر اسلام کے حقیقی چہرہ کو مسخ کرنے کوششوں میں مصروف ہیں، لیکن یہ یاد رہے کہ مثل مشہور ہے کہ کل فرعون موسی، اﷲ تعالیٰ اپنے پسندیدہ ترین دین اور اس کے لیے اپنی جانوں کا نظرانہ پیش کرنے والے بندوںکی حقانیت لوگوں پر آشکارا کر دیتا ہے۔ زیر نظر رسالہ اسی سلسلہ کی ایک کڑی ہے جس میں علمائے دیوبند کے خلاف الزامات کا طوفان کھڑا کرنے والے مجدد بدعات احمد رضا خان بریلوی کی خوب تردید کی ہے نیز احمد رضا خان کی علمی و دینی خیانت کی بھی خوب نشاندہی کی ہے نیز علمائے حجاز کے درمیان خان بریلوی کے مقام و مرتبہ کی بھی خوب وضاحت کی ہے۔ اللہ تعالی ان کی کاوش کو مقبول فرمائیں اور ہم کو قرآن سنت کی صحیح معنوں میں پیروی کرنے اور شرک و بدعت کی نجاست سے دور رہنے کی توفیق عنایت فرمائے۔ آمین




::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::

Difa-e-Sahaba (دفاع صحابہ وقت کی اہم ترین ضرورت)

May 30, 2009
Dif_Shb
ہر وہ مسلمان جس کا دل اللہ اور رسول اللہ کی محبت سے لبریز ہو اس پر لازم ہےکے نبی کے تمام اصحاب سے بھی محبت و الفت رکھے کیونکہ اللہ رب العزت نے اس جماعت مقدسہ پر ایسے انعامات کیے ہیں جسمیں ان کا کوءی شریک نہیں۔ اب کوءی دوسرا انسان ان کے کمال استعداد؛ وسعت علوم اور وراثت نبوی کو حاصل نہیں کر سکتا۔ زیر نظر رسالہ ایسی عنوان ”دفاع صحابہ” کی اہمیت اور وقعت کے بیان میں ہے۔دفاع صحابہ کیوں ضروری ہے اور اس کے لیے کءی نقلی و عقلی دلاءل سے اس بات کو ثابت کیا کہ صحابہ کرام کا دفاع ضروری ہے۔ نیز اس رسالہ میں صحابہ کرام کی عظمت و منقبت پر چالیس احادیث بھی جمع کردی ہے۔ خالق لم یزل سے دستہ بدستہ دعا ہے کہ بندے کی صحابہ کی اس خدمت کو قبول کرتے ہوءے شرف قبولیت سے نوازے اور مسلمانوں کے دل میں دفاع صحابہ کے جذبہ کو مزید تقویت دے۔آمین


:::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Barat-e-Usman (برات عثمان ذوالنورین)

May 30, 2009
Brt_USm
مودودی صاحب نے عمر کے آخری وقت میں یاران رسول کے ایمان و عمل کو بھی خود تراشیدہ عقل و منطق کی ترازو میں باقاعدہ تولنا شروع کیا اور خلیفہ راشد سوم حضرت عثمان بن عفان رضی اللہ تعالی عنہ کی ذات کو تنقید کا نشانہ بنایا۔ مولف رسالہ نے مشاجرات صحابہ اور اختلافات صحابہ جیسے خطرناک موضوع کے باوصف ایک مدعی علم و قیادت کی تمام متعصبانہ اور جارحانہ تحریری چالوں کا مکمل و مدلل جواب بھی دیا ہے اور صحابہ کے متعلق کتاب و سنت کے اصول کی جگہ تاریخ و سیرت کی ضعیف و موضوعہ روایات کے سہاری کی گءی قلمی شعبدہ بازیوں کا پردہ بھی چاک کر ڈالا ہے۔


::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Fitna Inkar-e-Hadees aur uska Pasmanzar (فتنہ انکار حدیث اور اسکا پس منظر)

July 22, 2009
Hds_Asq
دور حاضر کے فتنوں میں انکار حدیث کا فتنہ بھی سر اٹھاءے ہے ہے۔منکرین حدیث کی کتابیں اور رسالے امت مسلمہ پھیل رہے اور جن حضرات کو مطالعہ کرنے کا ذوق نہیں ہے وہ ان کی تحریروں سے متاثر ہو جاتے ہیںاور شدہ شدہ ان کے حامی بن کر اہل باطل کے گروہ میں شامل ہو جاتے ہیں۔زیر نظر رسالہ میں مولف نے منکرین حدیث کے زیغ و ضلال کی نشاندہی کی ہے اور ان کی تلبیس و تزویر کا پردہ چاک کیا ہے۔دعا ہے کہ اللہ جل شانہ اس سعی کو قبول فرماءے اور گمراہوں کی ہدایت کا ذریعہ بناءے۔ آمین


::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Asar-e-Qayamat aur Fitna-e-Dajjal ki Haqeeqat (آثار قیامت اور فتنہ دجال کی حقیقت)

February 17, 2009
daj_qmt
زیر نظر کتاب میں مولف نے قرب قیامت میں وقوع پذیر ہونے واقعات کی منظر کشی قرآن و حدیث کی ہے ۔ نیز دوسرا حصہ میں نزول مسیح علیہ السلام؛ ظہور مہدی رضی اللہ تعالی عنہ؛ خروج دجال وغیرہ کے متعلق تحقیقی مضامین کا اضافہ بھی کیا گیا ہے نیز اس ضمن میں منکرین حدیث کی طرف سے اٹھاءے جانے والا اعتراضات کا بھی ازالہ کیا گیا ہے۔ یہ کسی کتاب کا جواب نہیں ہے بلکہ اس تحریر کا مقصد ہدایت کے طالبین کے ذہنوں میں موجود تشویش کا اذالہ غرض و غایت ہے۔ اللہ سے دعا ہے کہ اسے ہم سب کی ہدایت کا ذریعہ بناءے اور مولف اور مترجم کے لیے آخرت میں کامیابی کا ذریعہ ثابت ہو۔ آمین


::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Alamat-e-Qayamat aur Nuzool-e-Maseeh (علامات قیامت اور نزول مسیح)

February 13, 2009
qym_msh
مذکور کتاب تین حصوں پر مشتمل ہے۔ حصہ اول جو مسیح موعود کی پہچان کے نام سے شاءع ہو چکا ہے اور اس میں علامات مسیح کا اجمالی نقشہ اور انکا مقابلہ دجال قادیان )مرزا غلام احمد قادیانی( کے حالات سے کیا گیا ہے۔ دوسرے حصہ میں نزول مسیح کی احادیث متواترہ کا احاطہ کیا گیا ہے۔تیسرے حصہ علامات قیامت کے بارے میں ہے۔ اس میں وہ تمام علامات قیامت ایک خاص انداز پر مرتب کی گءی ہیں جو حصہ دوم کی احادیث میں آءی ہیں نیز علامات قیامت کے بعض اہم پہلووں پر قرآن و سنت کی روشنی میں تحقیقی بحث کی گءی ہے۔حق تعالی مقبول و مفید بنادے وہوالمستعان وعلیہ التکلان


:::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Seerat-e-Abu Huraira (سیرت ابوہریرہ رضی اللہ تعالی عنہ)

November 21, 2009

سیدنا ابوہریرہ رضی اللہ تعالی عنہ ان عاشقان رسول میں سے ہیں جنہوں نے کاوش کی کہ حضور صلی اللہ علیہ وسلم کے ایک ایک لفظ، عمل اور ایک ایک ادا کو پورا تحفظ دیں اور حیات نبوی کا کوئی گوشہ ایسا نہ رہے جو بقائے دوام سے معمور اور اسفار امت میں مزبور نہ ہو۔ بعد میں آنے والے محدثین ان کے نقش پا پر چلتے رہے اور اعمال نبوت اس محنت سے اعمال امت میں ڈھلتے رہے کہ آقا افضل الرسول صلی اللہ علیہ وسلم کی زندگی کا ایک ایک گوشہ محفوظ اور کتابوں میں مسطور ہے۔ یہ اس امت کا شرف ہے جو اہل کتاب کی آنکھوں کا خار تھا جس نے انہیں احساس کمتری میں مبتلا کر رکھا تھا اسی وجہ سے وہ علم حدیث پر حملہ آور ہوئے اور ان کا پہلا نشانہ سیدنا حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ تعالی عنہ تھے۔اگر اس جلیل القدر صحابی کی شخصیت مجروح ہوتی ہے تو علم حدیث کی پوری دیوار گرتی ہے اور حدیث نہ ہوتو یہ امت بھی اہل کتاب کی ان صفوں میں آجاتی ہے ۔اہل کتاب کی روش پر چلتے ہوئے بعض نافہم ، کوتاہ اندیش، اور اہل کتاب کے کاشتہ پودوں نے بھی اس صحابی رسول کی شخصیت مجروح کرنے کی کوشش کی۔مولف کتاب نے ابوہریرہ رضی اللہ تعالی عنہ کے پاکیزہ حالات و سوانح دیدہ ریزی سے جمع کر کے اپنے لیے زاد آخرت اور صراط مستقیم کے طالبین کے لیے سنگ میل مہیا کردیا ہے اور ان وہی نکتہ چینیوں کا جواب با صواب یکجا کر دیا ہے جو اس جلیل صحابی پر ظالم طبقہ کی جانب سے کیا جاتا ہے۔ اللہ تعالی مولف کو جزائے خیر اور تالیف کو مقبولیت عامہ کے شرف سے سرفراز فرمائے ۔آمین


::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Seerat Aaima Arbaa (سیرت اءمہ اربعہ)

June 8, 2009
Srt_Ama
علماءے اسلام نے دین اور کتاب و سنت کی حفاظت و صیانت کے لیے ابتداء میں فن اسماء الرجال سے کام لیا اور روات حدیث کے حالات مرتب کر کے ان کی زندگی کے ایک ایک پہلو پر بڑی دیانتداری اور ذمہ داری سے روشنی ڈالی اور آگے چل کر اس فن میں بڑی وسعت پیداءی ہوءی جس کے نتیجہ میں سلف اور خلف کے درمیان واسطہ العقد کی حیثیت سے طبقات و تراجم کا فن وجود میں آیا اور ہر دور کے بےشمار علماء کے ارباب فضل و کمال کے حالات زندگی اور ان کے دینی و علمی کارناموں سے مسلمانوں کو استفادہ کا موقع ملا۔ زیر نظر کتاب بھی اسی سلسلہ کی ایک کڑی ہے جس میں مولف نے اسلامی فقہ کی ابتداءی تاریخ و تدوین کی تفصیل؛ اءمہ اربعہ کے حالات زندگی اور ان کے دینی کاموں کا مستند تذکرہ کیا ہے۔


:::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Pyary Nabi ki Sahabzadiyan (پیارے نبی کی پیاری صاحبزادیاں)

June 1, 2009
Rsl_Dht
آج کے جدید دور میں جب انسان آسمان کی وسعتوں میں اور زمین کی گہراءیوں میں مصروت تحقیق ہے۔ یورپ اور دیگر ممالک میں ترقی کے نام پر عورت کی جو تذلیل ہو رہی ہے اور وہ مردوں کے ہاتھوں میں کھلونا بنی ہے ہمیں عبرت حاصل کرنی چاہیے اور ان پاک سیرت صحابیات و صالحات کی سیرت کا مطالعہ کرنا چاہیے جن سے ہمری زندگی میں نور پیدا ہو اور ان کے واقعات ان کی شخصیت ہماری خواتین کے ذہنوں کو دین کی طرف لانے کے لیے مشعل راہ ثابت ہو۔زیر نظر کتاب میں مولف نے اسی ضرورت کے تحت حضور علیہ الصلوہ والسلام کی صاحبزادیوں کی سیرت پیش کرنے کی کوشش کی ہے۔ اور ان کے پاکیزہ حالات کا تذکرہ کیا تاکہ ہم ان بابرکت شخصیات کی برکت سے دنیا اور آخرت میں اپنے لیے نجات کا سامان کر سکیں۔اللہ اس ادنی سعی کو قبول فرماءےاور ہمارے لیے مشعل راہ بناءے۔آمین


::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Akabir ki Zahidana Zindagi (اکابر کی زاہدانہ زندگی)

May 18, 2009
Aka_Znd
زیر نظر کتاب ”اکابر کی زاہدانہ زندگی” میں مولف نے اکابرین علماء کی سوانحات سے ان کے زہد و تقوی سے متعلق حالات کو قلمبند کیا ہے جس سے ثابت ہوتا ہے کہ ان اکابرین کی زندگیوں کے ہر پہلو سے سنت نبویہ صلی اللہ علیہ وسلم چھلکتی نظر آتی ہے۔ زہد بھی آپکی زندگیوں میں بدرجہ اتم پایا جاتا ہے۔ اکابر کے واقعات انسانی زندگی کے انقلاب کے لیے ایک موثر عنصر ہے اور اگر کہا جاءے کہ یہ حکایات نہیں بلکہ نقد حال الرجال کے لیے بہترین نسخے ہیں تو بے جا نہ ہوگا۔
اللہ تعالی سے دعا ہے کہ مولف کی کتاب کو قبولیت بخش کرعام وخاص مسلمانوں کی اصلاح کے لیے نسخہ اکسیر ٹھہراءے۔آمین




:::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Imam Abu Hanifa k Waqiat(امام ابو حنیفہ کے حیرت انگیز واقعات)

October 29, 2008
زیر نظر کتاب میں امام ابوحنیفہ )رع( کی فکرو نظر؛علم و عمل؛تاریخ و تذکرہ؛فقہ قانون؛ اخلاص و للہیت ؛ طہارت و تقوی؛ سیاست و اجتماعیت؛ جذبہ اصلاح؛ انقلاب امت؛ تبلیغ و اشاعت دین؛ تعلیم و تدریس؛ غرض ہر پہلو پر جامع اور مفید بحث کی گءی ہے۔
Imam Abu Hanifa (RA) is one of the Leading Scholar of Islam. He is the founder of Fiqh Hanafi. This book explains in detail all aspects of HIS life. It is one of best book on the Biography of Imam (RA). Right Click and choose “Save Target As” to download the Book.


:::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


اسلام اور سیاست حاضرہ(Islam aur Siyasaat-e-Hazira)

December 29, 2010
عصر حاضر میں اسلام کے عملی نفاذ اور زندگی کے مختلف شعبوں میں نت نئے پیدا ہونے والے مسائل کے اسلامی حل کے لیے متفرق کوششیں کی جارہی ہیں جو ایک مستحسن عمل ہے اور علماء اپنی ذمہ داریوں کو محسوس کرتے ہوئے عوام کی رہنمائے فرما رہے ہیں۔ اللہ انہیں دارین میں جزائے خیر عطا فرمائے۔ اسی سلسلہ میں ایک مسئلہ سیاست بھی ہے۔زیر نظر رسالہ میں مولف نے ووٹ کی شرعی حیثیت، دینی و سیاسی جماعتوں، مسئلہ قومیت اور بین الاقوامی منظر نامی میں عالم اسلام کو درپیش مسائل جیسے اہم موضوعات پر قلم اٹھایا۔ اللہ تعالی سے دعا ہے کہ وہ اس کاوش کو قبول فرمائے اور ہمارے لیے ہدایت کا ذریعہ بنائے۔آمین


:::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


اسلام اور جدت پسندی(Islam & Modernism)

December 22, 2010
جدت پسندی بذات خود ایک مستحسن جذبہ اور انسان کی ایک فطری خواہش ہے، اگر یہ جذبہ نہ ہوتا تو انسان پتھر کے زمانے سے ایٹم کے دور تک نہ پہنچتا۔چنانچہ اسلام نے جو ایک فطری دین ہے، کسی جدت پر بحیثیت جدت کے کوئی پابندی عائد نہیں کی، بسا اوقات اسے مستحسن قرار دیا ہے اور اس کی ہمت افزائی کی ہے۔لیکن یہ بھی اپنی جگہ حقیقت ہے کہ جس طرح جدت پسندی نے انسان کو مادی ترقی کے بام عروج تک پہنچایا ہے، اسی طرح اس نے انسان کو بہت سے نفسانی امراض میں بھی مبتلا کیا ہے اور بہت سے تباہ کن نقصانات بھی پہنچائے ہیں۔اس سے معلوم ہوا کہ جدت پسندی ایک دو دھاری تلوار ہے جو انسانیت کو فائدہ پہنچانے کے کام بھی آسکتی ہے اور اس کا کام تمام بھی کر سکتی ہے۔لہذا ایک جدید چیز نہ محض نئی ہونے کی بناءپر قابل قبول ہے اور نہ محض نئی ہونے کی بناءپر قابل تردید ۔
اس کے بعد سب سے اہم سوال یہ ہے کہ وہ کیا معیار ہے جس کی بنیاد پر یہ فیصلہ کیا جاسکے کہ فلاں جدت مفید اور قابل قبول ہے اور فلاں مضر اور ناقابل قبول؟
مولف نے اس کتاب میں اسی حد کی نشاندہی کی ہے، جس کی روشنی میں یہ فیصلہ باآسانی کیا جا سکتا ہے کہ کونسی جدت قابل قبول ہے اور کونسی نا قابل قبول۔ اﷲ ہم سب کو صراط مستقیم پر استقامت عطا فرمائے۔ آمین


:::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Aqal aur uksa Maqam (عقل اور اسکا مقام)

July 22, 2009
Aql_Mqmاللہ جل شانہ نے انسان کو پیدا فرمایا اور اسےاشرف المخلوقات بنایا اور عقل جیسی نعمت سے نوازا جسے استعمال کر کے انسان دوسری تمام مخلوقات سے ممتاز ہوتا ہے اور عقل کو استعمال کرنے کا حکم دیگیا ہے۔ دین اسلام انسان کو عزت و رفعت عطا کرنا چاہتا ہے اس لیے قرآن کریم اور احادیث نبویہ نے ہمیں یہ حکم دیا ہے کہ ہم غور و فکر اور عقل و تدبر سے کام لیں اور تحمل اور حکمت سے تمام امور کا موازنہ کریں۔علامہ ابن ابی الدنیا نے عقل اور اس کے فضل و مرتبہ سے متعلق احادیث اور اقوال کا یہ حصہ جمع کیا ہے۔ اس کتابچہ میں وارد اکثر احادیث ضعیف اور ناقابل اعتبار ہیں اسی لیے صاحب کتاب نے اس میں آثارو اقوال کا بھی ایک معتدبہ حصہ نقل کیا ہے۔ اللہ تعالی ہم سب کو ان لوگوں میں سے بناءیں جو عقل سے صحیح فاءدہ اٹھا کر اللہ تعالی کی رحمت ؛مغفرت؛ جنت اور قرب حاصل کرنے والے بنتے ہیں۔آمین


:::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Seerat-e-Mustafa SAW (سیرت المصطفٰے صلی اللہ علیہ وسلم کامل تین جلد)

June 15, 2010

الحمد للہ یہ شرف صرف امت محمدیہ علی صاحبہا الف الف صلوة و الف الف تحیة کو حاصل ہے کہ وہ اپنے پیغمبر کے ہر قول اور ہر فعل کو متصل اور مسلسل سند کے ساتھ پیش کرتی ہے، یہی اور صرف یہی ایک امت ہے کہ اپنے نبی سے متصل ہے۔مولف کتاب نے اس مختصر سیرت میں جہاں صحت ماخذ اور روایات کے معتبر اور مستند ہونے کا التزام کیا ہے وہاں سرار و حکم کا بھی کچھ اہتمام کیا ہے جو انشاءاللہ العزز نافع اور مفید ہوگا۔ جس طرح غیر مستند اور غیر معتبر روایات سے پرہیزکیا گیا ہے ، بالکل اسی طرح کسی ڈاکٹر یا فلاسفر یا کسی یورپی مستشرق سے گھبرا کر نہ کسی روایت کو چھپایا ہے اور نہ ہی کسی حدیث میں ان کی خاطر سے کوئی تاویل کی ہے، اور نہ راویوں پر جرح کر کے اس حدیث کو غیر معتبر بنانے کی کوشش کی ہے۔ اس طرح سیرت النبی صلی اللہ علیہ وسلم کایہ مختصر مجموعہ حضرات محدثین کے علمی سرمایہ اور ذخیرہ کا ترجمان ہے ، مولف نے جو حضرات محدثین کے یک کمترین خادم اور غلام ہے ،نے محدثین حضرات کے علمی جواہرات اور موتیوں کو سلیقہ اور ترتیب دے کر علم کے شائقین کے سامنے پیش کیا ہے۔اللہ تعالی سے دعا ہے کہ اے پروردگار عالم تو ناچیز مولف کی اس ناچیز خدمت کو قبول فرما اور مولف ، ناشرین، اور اشاعت میں تعاون کرنے والے حضرات کے حق میں اس کو خیر جاری اور توشہ آخرت بنا۔آمین ثم آمین


:::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Rehmat-ul-lil-Alameen(رحمةللعلمین)

May 29, 2010

رحمة للعلمین، خاتم النبیین، سید المرسلین حضرت محمد صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی سیرت پر دنیا کی تقریبا ہر زبان میں بہت کچھ لکھا جا چکا ہے اور قیامت تک انشاءاللہ لکھا جاتا رہیگا ۔ ہر دور میں عصری تقاضوں کو مد نظر رکھتے ہوئے مختلف نقطہ نگاہ سے نبی امی صلی اللہ علیہ وسلم کی سیرت کو قلمبند کیا گیا ہے اور کیا جاتا رہیگا۔زیر نظر تصنیف بھی اپنے اندر کئی منفرد خصوصیات لیے ہوئے سیرت طیبہ سے متعلق مواد کا ایک ایسا گلدستہ ہے جس کی مثال اردو زبان میں تو درکنار دیگر زبانوں میں بھی نہیں ملتی۔ مولف نے اخذ روایات میں انتہائی حزم و احتیاط سے کام لیا اور رطب و یابس یا موضوع روایات جمع کرنے کے بجائے صحت و ثقاہت کا خیال رکھا ہے۔ تاریخی روایات پر حسب ضرورت نقد و درایت سے کام لیا ہے۔ نیز اس کتاب کی سب سے بڑی خصوصیت یہ ہے کہ مصنف کے ذوق کے مطابق سوانح اور واقعات کے ساتھ غیر مذاہب کے اعتراضات کے جوابات اور دوسرے صحف آسمانی کے ساتھ موازنہ اور خصوصیت سے یہود و نصاری کے دعاوی کا ابطال بھی اس میں جا بجا ہے۔ انہی خصوصیات کی بناءپر رحمة للعلمین برصغیر کی جملہ کتب سیرت سے منفرد مقام و مرتبہ کی حامل ٹھہری۔ اللہ تعالی سے دعا ہے کہ مولف مرحوم کو رضائے الہی کی بہشت جاوید میں درجات عالیات نصیب ہوں اور ہمارے لیے بھی توشہ آخرت ثابت ہو۔آمین


::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


معارف الحدیث (Maarif-ul-Hadees)

November 24, 2010
   
    
 
اسلام دین کامل اور آخر ہے اور اللہ تعالی نے اس کی بقاء کے انتظامات بھی فرمائے ہیں،انہی میں سے ایک یہ بھی ہے کہ جس دور میں کتاب و سنت کی جس قسم کی خدمت کی ضرورت ہوتی ہے اللہ تعالی اپنے بعض بندوں کے دلوں میں اس کا شوق پیدا کر کے ان کو اس طرف متوجہ فرما دیتے ہیں۔ مولف کتاب ہذا نے بھی موجودہ زمانہ کے خاص حالات و ضروریات کا لحاظ رکھ کر احادیث نبویہ کا ایک متوسط درجہ کا جدید مجموعہ خاص اس مقصد کو مد نظر رکھتے ہوئے ترتیب دیا ہے جس سے موجودہ زمانہ کے عام تعلیم یافتہ مسلمانوں کی دینی، علمی اور ذہنی و فکری حالت اور عصر حاضر کے خاص علمی تقاضوں کو پیش رکھ کر عام فہم اردو زبان میں حدیثوں کی تشریح کی ہے۔
مولف نے آخری گزارش اپنے باتوفیق ناظرین سے یہ کی ہے کہ حدیث کا مطالعہ خالص علمی سیر کے لئے ہر گز نہ کیا جائے بلکہ آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم کے ساتھ اپنے ایمانی تعلق کو تازہ کرنے کے لئے اور عمل کرنے اور ہدایت حاصل کرنے کی نیت سے کیا جائے۔ نیز مطالعہ کے وقت رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کی عظمت و محبت کو دل میں ضرور بیدار کیا جائے اور اسی طرح ادب و توجہ سے پڑھا جائے یا سنا جائے کہ گویا حضورصلی اللہ علیہ وسلم کی مجلس اقدس میں حاضر ہین اور آپ فرما رہے ہیں اور ہم سن رہے ہیں، اگر ایسا کیا گیا تو انواروبرکات انشاء اللہ نقد نصیب ہونگے۔


::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


صحیح مسلم کامل(Sahi Muslim Complete )

September 4, 2010
صحیح مسلم صحاح ستہ میں صحیح مسلم کا دوسرا نمبر ہے اور طبقات کتب حدیث میں یہ طبقہ اول کی کتاب ہے۔ صحیح مسلم تین لاکھ حدیثوں کا انتخاب ہے۔ اس میں احادیث صحیحہ کو نقل کیا، مکرر کو حذف کردیاطرق و اسناد کو جمع کر دیا، فقہ اور تراجم کے بابوں پر مرتب ہے، یہ کتاب سہل الماخذ ہے، جودت ترتیب، حدیث کے شواہد و متابعات کے اجماع کے لحاظ سے اس کو صحیح بخاری پر ضرور ترجیح ہے۔ صحیح مسلم میں اسّی سے زیادہ حدیثیں ایسی ہیں جن کی سند میں امام مسلم اور رسول کریم صلی اﷲ علیہ وسلم کے درمیان چار واسطے ہیں یہ ان کی اعلی سند ہے۔
صحیح مسلم میں بعد حذف مکررات چار ہزار حدیثیں ہیں، شروح و حواشی وغیرہ کی تعداد تیس سے زیادہ ہیں۔




:::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::

Jam-e-Tirmizi Vol 01 (جامع ترمذی شریف مترجم اردو جلد اول)

October 3, 2009
JT0101  JT0102  JT0103
جامع ترمذی، امام ابو عیسی محمد بن عیسی ترمذی کی تصنیف ہے،صحاح ستہ میں نمبر سوم اور طبقات کتب حدیث میں طبقہ دوم کی کتاب ہے۔ اس کے متعلق محدثین کا قول ہے کہ مجتہد اور مقلد دونوں کے لیے کافی ہے۔ مجموعی حدیثی فوائد کے لحاظ سے اس کتا ب کو تمام کتب احادیث پر فوقیت حاصل ہے۔ اس کتاب کی نمایاں خصوصیات میں عراقیین اور حجازیین دونوں مسائل پر الگ الگ باب قائم کرنا، ہر باب کے تحت اگرچہ حدیث کا ذخیرہ تفصیلا نہ ہو لیکن اس باب میں جتنے صحابہ رضی اللہ تعالی عنہم کے نام گنوا کر اشارات کر جانا، رواة کی جرح و تعدیل، مشہور اسماءکی کنیتیں، مشہور کنیتوں کے اسمائ، سلف کا تعامل، ائمہ کے مسالک پر تقریبا ہر باب میں تنبیہہ کرتے جانا، وغیرہ وہ خصوصیات ہے جسکی وجہ سے حجم کے اعتبار سے مختصر ہونے کے باوجود فوائد کے لحاظ سے بہت بڑی کتاب ہے۔
جامع ترمذی شریف مترجم اردو کی زیر نظرجلد اول ابواب الطہارت، ابواب الصلوة ، ابواب الوتر، ابواب الجمعة اور ابواب السفر،ابواب الزکوة، ابواب الصوم، ابواب الحج، ابواب الجنائز، ابواب النکاح، ابواب الرضاعت، ابواب الطلاق والعان، ابواب البیوع، ابواب الاحکام، ابواب الدیات، ابواب الحدود، ابواب الصید، ابواب الضاحی، ابواب النذور والایمان، ابواب الجہاد، ابواب اللباس، ابواب الاطعمة، ابواب الاشربة، ابواب البرواصلة، ابواب الطب، ابواب الفرائض، ابواب الوصایا، ابواب الولاءوالھبة پر مشتمل ہے۔


:::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::

Jam-e-Tirmizi Vol 02 (جامع ترمذی شریف مترجم اردو جلد دوم)

October 3, 2009
JT0201  JT0202  JT0203
جامع ترمذی، امام ابو عیسی محمد بن عیسی ترمذی کی تصنیف ہے،صحاح ستہ میں نمبر سوم اور طبقات کتب حدیث میں طبقہ دوم کی کتاب ہے۔ اس کے متعلق محدثین کا قول ہے کہ مجتہد اور مقلد دونوں کے لیے کافی ہے۔ مجموعی حدیثی فوائد کے لحاظ سے اس کتا ب کو تمام کتب احادیث پر فوقیت حاصل ہے۔ اس کتاب کی نمایاں خصوصیات میں عراقیین اور حجازیین دونوں مسائل پر الگ الگ باب قائم کرنا، ہر باب کے تحت اگرچہ حدیث کا ذخیرہ تفصیلا نہ ہو لیکن اس باب میں جتنے صحابہ رضی اللہ تعالی عنہم کے نام گنوا کر اشارات کر جانا، رواة کی جرح و تعدیل، مشہور اسماءکی کنیتیں، مشہور کنیتوں کے اسمائ، سلف کا تعامل، ائمہ کے مسالک پر تقریبا ہر باب میں تنبیہہ کرتے جانا، وغیرہ وہ خصوصیات ہے جسکی وجہ سے حجم کے اعتبار سے مختصر ہونے کے باوجود فوائد کے لحاظ سے بہت بڑی کتاب ہے۔
جامع ترمذی شریف مترجم اردو کی زیر نظرجلددوم ابواب القدر، ابواب الفتن، ابواب الرویا، ابواب الشہادات، ابواب الزہد، ابواب صفة القیامة، ابواب صفة الجنة، ابواب صفة جہنم، ابواب الایمان، ابواب العلم، ابواب الاستیذان والادب ، ابواب الامثال، ابواب فضائل القرآن، ابواب القراة، ابوا ب التفسیر القرآن، ابواب الدعوات ، ابواب المناقب، اور ابواب العلل پر مشتمل ہے۔




:::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::

Sahih-ul-Bukhari Vol 01 (صحیح البخاری جلد اول)

August 18, 2009 SB0101  SB0102
SB0103  SB0104
صحیح البخاری وہ کتاب ہے جس کی نظیر عالم اسلام میں نہیں، جو طبقات کتب حدیث میں اول طبقہ کی کتاب ہے اور جسے صحاح ستہ میں بھی اول نمبر حاصل ہے اور جسے اصح الکتب بعد کتاب اللہ ہونے کا اعزاز بھی حاصل ہے، امام محمد بن اسماعیل بخاری کی تصنیف ہے، جس کی تصنیف کا آغاز مسجد الحرام میں بیٹھ کر کیا اور سولہ برس میں مسودہ تیار ہوا، مبیضہ مدینہ منورہ میں منبر مبارک اور روضہ رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے درمیان بیٹھ کر کیا۔
کتاب کااصل موضوع احادیث صحیحہ کا جمع کرنا ہے ، اس کے ساتھ ساتھ یہ بات بھی پیش نظر ہے کہ فقہی استنباطات و فوائد کا بھی اس میں ذکر کر دیا گیا ہے۔ امام رحمة اللہ علیہ ہر ترجمہ کے لیے دو رکعت نماز ادا کیا کرتے تھے۔ حدیث کے اس سدا بہار گلشن میں مکررات کو شمار کرک کے احادیث کی تعداد سات ہزار دوسو پچھتر ہےں۔ اصل کتاب عربی زبان میں اور دنیا کی تقریباتمام اہم زبانوں میں اس کے تراجم اور شروحات شائع ہو چکی ہیں۔ خود اردو زبان میں اس کے متعدد تراجم اور شروح شائع ہوئی ہیں، زیر نظر ترجمہ مولانا ظہور الباری اعظمی کی محنت شاقہ کا ثمر ہے۔ جس میں احادیث رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی اطمینان بخش ترجمانی، عام فہم شرح، اور مسائل حاضرہ سے کامل انطباق کا خصوصیت کے ساتھ التزام کیا گیا ہے۔ اس کے علاوہ بخاری شریف کے لطائف و خصوصیات کی کامل رعایت کرتے ہوئے قدیم و جدید شارحین کی گراں قدر تحقیقات سے پوری کتاب کو آراستہ ومزین کیا گیا ہے۔ مکمل ترجمہ تین جلدوں میں شائع کیا گیا ہے۔
زیر نظر جلد اول کتاب الوحی، کتاب الایمان، کتاب العلم، کتاب الوضوئ، کتاب الغسل، کتاب الحیض، کتاب التیمم، کتاب الصلوة، کتاب مواقیت الصلوة، کتاب الاذان، کتاب الجمعة، کتاب العیدین، ابواب الوتر، ابواب الاستسقائ، ابواب الکسوف، ابواب تقصیر صلوة، کتاب الجنائز، کتاب الزکوة، کتاب المناسک، ابواب العمرة اور کتاب الصوم ، کتاب البیوع، کتاب السلم، کتاب الشفعة، کتاب الاجارہ، کتاب الحوالہ، کتاب الوکالة، کتاب المساقاة، کتاب فی الخصومات، کتاب فی اللقطہ، کتاب الہبة، کتاب الرہن، کبات المکاتب، کتاب الشہاداة، کتاب الصلح، کتاب الشروط، کتاب فی المظالم والغضب پر مشتمل ہے۔::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Sahih-ul-Bukhari Vol 02 (صحیح البخاری جلد دوم)

October 2, 2009
SB0201  SB0202
 
SB0203  SB0204
صحیح البخاری وہ کتاب ہے جس کی نظیر عالم اسلام میں نہیں، جو طبقات کتب حدیث میں اول طبقہ کی کتاب ہے اور جسے صحاح ستہ میں بھی اول نمبر حاصل ہے اور جسے اصح الکتب بعد کتاب اللہ ہونے کا اعزاز بھی حاصل ہے، امام محمد بن اسماعیل بخاری کی تصنیف ہے، جس کی تصنیف کا آغاز مسجد الحرام میں بیٹھ کر کیا اور سولہ برس میں مسودہ تیار ہوا، مبیضہ مدینہ منورہ میں منبر مبارک اور روضہ رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے درمیان بیٹھ کر کیا۔
کتاب کااصل موضوع احادیث صحیحہ کا جمع کرنا ہے ، اس کے ساتھ ساتھ یہ بات بھی پیش نظر ہے کہ فقہی استنباطات و فوائد کا بھی اس میں ذکر کر دیا گیا ہے۔ امام رحمة اللہ علیہ ہر ترجمہ کے لیے دو رکعت نماز ادا کیا کرتے تھے۔ حدیث کے اس سدا بہار گلشن میں مکررات کو شمار کرک کے احادیث کی تعداد سات ہزار دوسو پچھتر ہےں۔ اصل کتاب عربی زبان میں اور دنیا کی تقریباتمام اہم زبانوں میں اس کے تراجم اور شروحات شائع ہو چکی ہیں۔ خود اردو زبان میں اس کے متعدد تراجم اور شروح شائع ہوئی ہیں، زیر نظر ترجمہ مولانا ظہور الباری اعظمی کی محنت شاقہ کا ثمر ہے۔ جس میں احادیث رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی اطمینان بخش ترجمانی، عام فہم شرح، اور مسائل حاضرہ سے کامل انطباق کا خصوصیت کے ساتھ التزام کیا گیا ہے۔ اس کے علاوہ بخاری شریف کے لطائف و خصوصیات کی کامل رعایت کرتے ہوئے قدیم و جدید شارحین کی گراں قدر تحقیقات سے پوری کتاب کو آراستہ ومزین کیا گیا ہے۔ مکمل ترجمہ تین جلدوں میں شائع کیا گیا ہے۔
زیرنظر جلد دوم کتاب الشروط، کتاب الوصایا، کتاب الجہاد، کتاب بدا الخلق، کتاب الانبیائ، کتاب المغاذی، کتاب التفسیر، اور فضائل القرآن پر مبنی ہے۔


::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Sahih-ul-Bukhari Vol 03 (صحیح البخاری جلد سوم)

October 3, 2009
SB0301SB0302SB0303
صحیح البخاری وہ کتاب ہے جس کی نظیر عالم اسلام میں نہیں، جو طبقات کتب حدیث میں اول طبقہ کی کتاب ہے اور جسے صحاح ستہ میں بھی اول نمبر حاصل ہے اور جسے اصح الکتب بعد کتاب اللہ ہونے کا اعزاز بھی حاصل ہے، امام محمد بن اسماعیل بخاری کی تصنیف ہے، جس کی تصنیف کا آغاز مسجد الحرام میں بیٹھ کر کیا اور سولہ برس میں مسودہ تیار ہوا، مبیضہ مدینہ منورہ میں منبر مبارک اور روضہ رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے درمیان بیٹھ کر کیا۔
کتاب کااصل موضوع احادیث صحیحہ کا جمع کرنا ہے ، اس کے ساتھ ساتھ یہ بات بھی پیش نظر ہے کہ فقہی استنباطات و فوائد کا بھی اس میں ذکر کر دیا گیا ہے۔ امام رحمة اللہ علیہ ہر ترجمہ کے لیے دو رکعت نماز ادا کیا کرتے تھے۔ حدیث کے اس سدا بہار گلشن میں مکررات کو شمار کرک کے احادیث کی تعداد سات ہزار دوسو پچھتر ہےں۔ اصل کتاب عربی زبان میں اور دنیا کی تقریباتمام اہم زبانوں میں اس کے تراجم اور شروحات شائع ہو چکی ہیں۔ خود اردو زبان میں اس کے متعدد تراجم اور شروح شائع ہوئی ہیں، زیر نظر ترجمہ مولانا ظہور الباری اعظمی کی محنت شاقہ کا ثمر ہے۔ جس میں احادیث رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی اطمینان بخش ترجمانی، عام فہم شرح، اور مسائل حاضرہ سے کامل انطباق کا خصوصیت کے ساتھ التزام کیا گیا ہے۔ اس کے علاوہ بخاری شریف کے لطائف و خصوصیات کی کامل رعایت کرتے ہوئے قدیم و جدید شارحین کی گراں قدر تحقیقات سے پوری کتاب کو آراستہ ومزین کیا گیا ہے۔ مکمل ترجمہ تین جلدوں میں شائع کیا گیا ہے۔
زیر نظر جلد سوم کتاب التفسیر، کتاب النکاح، کتاب الطلاق، کتاب الاطعمة، کتاب الحقیقہ، کتاب الذبائع، کتاب الضاحی، کتاب الاشربہ، کتاب الطب، کتاب اللباس، کتاب الادب، کتاب الاستیذان، کتاب الدعوات، کتاب الرقاق، کتاب التقدیر، کتاب الایمان، کتاب النذور، کتاب الفرائض، کتاب الحدود، کتاب الدیات، کتاب الاکراہ، کتاب الحیل، کتاب التعبیر، کتاب الفتن، کتاب الاحکام، کتاب التمنی، کتاب التوحید، کتاب الاعتصام بالکتب والسنة، کتاب الستتابہ المرتدین پر مبنی ہے۔




:::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Kalima Tayyaba ki Haqeeqat (کلمہ طیبہ کی حقیقت)

February 20, 2009
kal_tyb”کلمہ طیبہ کی حقیقت” میں مولف نے اسلامی کلمہ ”لاالہ الا اللہ محمد رسول اللہ” کے دونوں اجزاء یعنی ”توحید الہی” اور ”رسالت محمدی” کی محققانہ اور موثر انداز میں تشریح و توضیح کی ہے۔نیز اس کلمہ کی روح و حقیقت کو واضح کر کے بتلایا گیا ہے کہ اپنے ماننے والوں )ہم مسلمانوں( سے اس کلمہ کا مطالبہ کیا ہے!دعا ہےکہ اللہ سبحانہ وتعالی ہمیں اسے سمجھنے کی اور اس کے مطابق عمل کی توفیق عطا فرماءے۔ آمین


:::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Masala Tehreef-e-Quran (مسءلہ تحریف قرآن)

November 12, 2008
thr_qrnدارالافتاء جامعہ علوم اسلامیہ بنوری ٹاءون میں ایک تفصیلی استفتاء جمع کرایا گیا جس میں شیعوں کی طرف تحریف قرآن کے عقیدہ کی نسبت کو غلط قرار دیا گیا اور ساتھ ہی اہل سنت والجماعت )کثراللہ سوادھم( کے علماء کی کتب سے فرضی طور پر تحریف ثابت کرنے کی کوشش کی گءی۔اس کا مدلل و مفصل جواب مولف نے موثر انداز میں دیا اور ان کے عقیدہ تحریف کو ان کی کتب سے بھرپور انداز میں ثابت کیا ہے اور علماءے اہل سنت پر ان کے کذب و افترا کا پردہ چاک کیا ہے۔
This book is reply to a detailed query submitted by the Shia in which they dishonoured the issue of Changes in Quran, and they argued that Scholars of the Truth (Ulama-e-Haq Ahl-e-Sunnat) did the changes. In this book, the author defended the false allegations and proved that Shias’ dishonour is not correct proved this by their own books.


::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Masala-e-Taqdeer (مسءلہ تقدیر)

November 2, 2008
مسءلہ تقدیر اپنے آثار و مظاہر کے اعتبار سے اس قدر اجلی بدیہیات میں سے ہے کہ کوءی انسان اس سے آنکھ نہیں چرا سکتا۔ مسلمانوں کا ہرطبقہ مسءلہ تقدیر سے کسی طرح گریز نہیں کر سکتا۔ اس دور الحاد میں اس کی شدید ضرورت تھی کہ اہل عصر کے مذاق اور ذہن وفکر کے مطابق سلیس عنوان سے مسءلہ کے مختلف پہلووں کو واضح کیا جاءے۔ زیر نظر کتاب میں اس مسءلہ سے متعلق تین اکابرین امت کے رساءل جمع کر دیے گءے ہیں تاکہ مسءلہ کی وضاحت ہو جاءے۔
The Faith on Fate (Masala-e-Taqdeer) is fundamental belief in Islam and every sect knows its importance. It was needed since long to explain the core belief in a way compatible with the approach of common people todays world. To attain the aim, this book comprises three thessis from the Great Scholars of All Time (Akaabir-e-Ummat).




::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Aasaar-ut-Tanzeel Vol 1 and 2 (آثارالتنزیل جلد اول و دوم)

December 10, 2009

قرآن کریم اتارا ہوا پروردگار عالم کا اسے روح الامین لےکر اترے ہیں آپ کے دل پر تاکہ آپ ڈر سنانیوالوں میں سے ہوں۔ یہ عربی مبین میں ہے اور یہ ہے (اصولا) پہلی کتابوں میں بھی۔ مختصر تعارف قرآن بالقرآن کے بعد عرض ہے کہ قرآن کریم کا تعارف اور اس کا فہم و ادراک عقل و فلسفہ سے نہیں، لفظوں کے زیرو بم سے نہیں، بلند و بانگ دعوں سے نہیں، بلکہ ذات رسالت اور خیر امت سے وابستہ ہے۔زیر نظر کتاب میں مولف نے دراصل جدید تعلیم یافتہ نوجوانوں اور یونیورسٹی طلبہ کے ذہن کو مد نظر رکھتے ہوئے قرآن پاک کا تعارف مختلف جہات سے کرایا گیا ہے۔ قرآن کے اس تعارف میں طلبہ کے ذہن کو ان تعبیرات سے پاک رکھا گیا ہے جو اسلام کے چودہ سو سالہ سرمایہ علم میں نہیں ملتی، کیونکہ ہر نئی چیز میں ایک لذت اور دلچسپی تو مل جاتی ہے لیکن ان جدید تعبیرات کو ایک سلسلہ نہیں کہہ سکتے، سلسلہ وہی ہے جو مسلسل چلا آئے۔ اسلام ایک کامل دین ہے جو چودہ سو سالہ محفوظ تاریخ رکھتا ہے اور زندگی کے تمام جدید تقاضوں میں بھی مکمل راہنمائی کرتا ہے یہی وجہ ہے کہ ہم تاویلات جدیدہ سے اسے اپنے ماضی سے نہیں کاٹ سکتے۔ اگر اسلام کی جدید تعبیرات صحیح بھی ہوں تو صرف جزئیات کا حکم رکھتی ہیں۔یہ کتاب دو جلدوں پر مشتمل ہے۔
جلد اول ضرورة القرآن، خصوصیات القرآن، صداقت القرآن، فضائل القرآن ، نزول القرآن، جمع القرآن، کتابت القرآن، ترتیب القرآن، احرف القرآن، حفاظت القرآن، حفظ القرآن، لسان القرآن، ترجمة القرآن، تجوید القرآن، قرا ت القرآن، اسلوب القرآن، سور القرآن، ایمان القرآن، مقام القرآن، علوم القرآن، حقائق القرآن، تلاوت القرآن، اعجاز القرآن، نسخ فی القرآن، اور تاثیر القرآن جیسے اہم ترین موضوعات پر مشتمل ہے،
جبکہ جلد دوم ایک قرآن، آداب القرآن، ارض القرآن، امثال القرآن، اصطلاحات القرآن، اصحاب القرآن، قصص القرآن، تراجم القرآن،تفسیر القرآن، ربط القرآن، علاج بالقرآن، لغات القرآن، فہرست بست بابی لمضامین القرآن، اور آراءالمستشرقین فی بیان القرآن جیسے موضوعات پر مشتمل ہے۔
اللہ رب العزت کے حضور میں دعا ہے کہ وہ آثار التنزیل کو قبولیت بخشے اور اس خدمت کو ان تمام حضرات کے باقیات صالحات میں جگہ دے جن کی ہمت اور اعانت سے یہ نادر علمی تحفہ اشاعت پذیر ہوا ہے اور عوام الناس کے لیے نافع اور ہدایت کا ذریعہ بنائے۔آمین




::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Uloom-ul-Quran — Shams-ul-Haq (علوم القرآن-شمس الحق افغانی)

August 27, 2009
Ulm_Qrnsدرج ذیل کتاب علوم قرآنی پر مولف کی عمدہ تصنیف ہے جو ضرورة القرآن (یعنی نوع انسانی کے لیے وحی الہی اور قرآن کی ضرورت پر عقلی و فلسفی دلائل)، صداقة القرآن (یعنی قرآن کے منجانب اللہ ہونے اور معجز ہونے کی عقلی دلائل اور مستشرقین یورپ کی تردید)، تنزیل القرآن و تدوینہ(یعنی نزول قرآن و جمع قرآن کی تحقیق)، محفوظیة القرآن( یعنی قرآن کی محفوظیت کے دلائل اور مستشرقین کے شبہات کی تردید) اور مہمات القرآن(یعنی قرآن کے اہم مقامات کا حل اور ان کے حکم و اسرار اور ازالہ شبہات) پر مشتمل ہے۔مولف نے زیر نظر کتاب میں تعبیرات میں اصطلاحی تعبیرات سے کم کام لیا ہے اور زیادہ تر جدید مذاق کے مطابق رکھا ہے، نیز مطالب قرآن کے تعین میں اسلاف امت سے انحراف نہ ہو اور جو کچھ معارف و حقائق بیان ہوں وہ اپنے اندر مسلک سلف کی تائیدی شان رکھتے ہوں نہ تحریفی۔اس کے علاوہ دورحاضر چونکہ دور عقلیت و فلسفیت کا لہٰذا مقاصد شرعیہ نقلیہ کو عقل اور فلسفہ کے رنگ میں بیان کیا اور مغرب زدہ طبقہ کے لئے سامان ہدایت بن جائے۔


 ::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Uloom-ul-Quran (علوم القرآن)

February 13, 2009
ulm_qrn”علوم القرآن” ایک وسیع علم ہے جس پر عربی میں ضخیم کتابیں موجود ہیں اور اردو میں بھی کءی کتابیں آچکی ہیں؛ لیکن اس موضوں پر ایک ایسی کتاب کی ضرورت تھی جس میں جدید نسل کی رہنماءی کے لیے جدید انداز میں قرآنی حقاءق کو واشگاف کیا جاءے؛ جس مں وحی اور نزول قرآن؛ ترتیب نزول؛ قرا ءات سبعہ؛ اعجاز قرآنی وغیرہ وغیرہ ؛ حقاءق قرآنی کے ابحاث اس طرح بصیرت افروز انداز سے آجاءیں جس میں مستشرقین کے اوہام و وساوس اور خرافات یا معاندانہ شکوک و شبہات کا تشفی کن مواد آجاءے اور مستشرقین کی قیادت میں مستغربین)مغرب زدہ طبقہ( کے مزعومات کا بھی جواب آجاءے۔ اللہ تعالی کا شکر ہے کہ مذکورہ کتاب وقت کی اس اہم ضرورت کو اچھی طرح پورا کیا گیا ہے اور اللہ تعالی سے امید ہے کہ اگر اس کتاب کو حق طلبی اور انصاف پسندی کے جذبے کے ساتھ پڑھا گیا تو انشاء اللہ اس سے علم تفصیر میں بصیرت بھی حاصل ہوگی اور اس راہ میں جو غلط فہمیاں ؛ شکوک شبہات اور گمراہیاں ؛ مستشرقین کی تلبیسات اور عام لوگوں کی ناواقفیت سے عموما ذہنوں میں پیدا ہوتی ہیں ان کا بھی تشفی بخش حل مل جاءے گا۔اللہ تعالی سے دعا ہے کہ مصنف کو عافیت کاملہ عطا فرماویں اور اس تصنیف کو اپنے فضل سے قبول فرماکر ان کے لیے اور سب کے لیے ذریعہ نجات بناءیں اور مسلمانوں کو اس سے زیادہ سے زیادہ نفع پہونچاءیں۔واللہ المستعان وعلیہ التکلان

::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Kitabat-e-Hadees Ahd-e-Risalat me (کتابت حدیث عہد رسالت و عہد صحابہ میں)

June 12, 2010
زیر نظر کتاب میں جاہلیت عرب میں کتابت کی ابتدائ، مکہ و مدینہ کے اہل قلم حضرات، عہد رسالت میں کتابت، کتابت کے بارے میں اسلامی روش اور اس کے اجتماعی زندگی پر اثرات، عہد رسالت میں کتابت حدیث، احادیث کے تحریری مجموعے، تبلیغی خطوط، انتظام مملکت کے مختلف شعبوں کے لیے قوانین و ہدایات کی تحریری نقول، اور اس ضمن میں اسلوب و انداز تحریر پر مفصل و مدلل مباحث پیش کیے گئے ہیں، نیز عہد صحابہ و تابعین میں کتابت حدیث اور احادیث لکھنے والے صحابہ کرام ، تابعین عظام، دوسری صدی ہجری میں تدوین حدیث اور احادیث کے مجموعے، وغیرہ امور پر نہایت بسط و شرح کے ساتھ بحثیں موجود ہیں۔ اس کے علاوہ کتاب کی ابتداءمیں حدیث اور اس کی حفاظ کے عنوان سے حجیت حدیث، منکرین حدیث اور مستشرقین کے اعتراضات کی حقیقت اور ان کے جواب اور حفاظت حدیث کے طریقوں پر بھی سیر حاصل بحث کی گئی ہے۔ غرض حفاظت حدیث کے طریقہ کتابت اور اس کے متعلق امور کی وضاحت کے موضوع پر اردو زبان میں یہ منفرد تحقیقی کتاب ہے، امید ہے کہ اس موضوع پر بہت سے ذہنوں کا خلجان دور کرنے کا باعث ہوگی، اللہ تعالی اپنی بارگاہ میں اسے شرف قبولیت عطا فرمائے آمین۔

 :::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::

Fun Asma-ur-Rijaal (فن اسماءالرجال)

April 17, 2010

حکمت الہی کی یہ ایک عجیب کار فرمائی ہے کہ ایک نبی امی کو ایک ایسی امت عطا ہوئی جس نے علم کی خدمت و اشاعت ہی نہیں اور علوم کی تکمیل و توسیع ہی نہیں بلکہ جدید علوم کی وضع و تدوین کا ایسا کارنامہ انجام دیا جس کی مثال گزشتہ تاریخ اور سابقہ امتوں میں نہیں مل سکتی۔ان علوم اسلامیہ کی فہرست بہت طویل ہے جن کی وضع و تدوین کا سہرا اس امت کے سر ہے اور جن کے ظہور میں آنے کا سبب و محرک قرآن مجید کا فہم اور تعلیمات نبوی کی حفاظت تھا،انہی علوم میں ایک فن اسماءالرجال بھی ہے جسکا امت مسلمہ کی خصوصیت ہونے کا اعتراف مستشرقین کو بھی ہے۔
زیر نظر کتاب فن اسماءالرجال ، جرح تعدیل اور اس کے متعلقات کے تعارف اور اصول و ضابطے کے بیان پر مشتمل ہے۔ نیز آخری باب میں اس فن کی اہم و مشہور کتابوں کا اجمالی تعارف بھی ہے اور ان کے مطبوع و مخطو ط ہونے کی نشاندہی کی گئی ہے۔
اللہ رب العزت سے دعا ہے کہ اس کتاب کو شرف قبولیت و دوام عطا فرمائے اور اس ناچیز کی لغزشوں و سیئات سے درگزر فرما کر علوم اسلام کی مزید خدمت کا موقع عطافرمائے۔آمین



::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Aasaar-ul-Hadees Vol 01 & 02 (آثار الحدیث جلد اول و دوم)

November 16, 2009
Asr_Hd2Asr_Hd1
مسلمان دیگر مذاہب کے بالمقابل علمِ حدیث میں ممتاز ہے۔ مسلمانوں نے قرآن کریم کے گرد علم حدیث کو پہرہ دار بنایا۔ قرآن کریم کے ساتھ وہ عمل نبوت کو بھی روایت کرتے گئے۔ پہلی پانچ صدیوں میں اس پر خاصی محنت ہوئی یہاں تک کہ علم حدیث کے سائے میں قرآن کریم ہر قسم کی تحریف سے محفوظ رہا۔ حدیث کی اس اہمیت کو محسوس کرتے ہوئے مذاہب عالم کے پیشواﺅں خصوصا اہل کتاب نے علم حدیث پر پوری مستعدی سے تشکیک کے کانٹے بکھیرے اور علمی راہ سے مسلمانوں پر حملہ آور ہوئے۔ افسوس اس بات کا ہے کہ ہمارا جدید تعلیم یافتہ طبقہ اور یونیورسٹیوں اور کالجوں کے طلبہ مطالعہ اسلام کے لیے بھی مغربی ماخذ پر زیادہ اعتماد کرتے ہیں۔ عربی نہ جاننے کے باعث اصل ماخذ تک ان کی رسائی نہیں ہوتی۔ علماءکی اردو میں لکھی کتابوں کا مطالعہ وہ اپنی کسر شان سمجھتے ہیں۔ پچیس سال پہلے مولف نے پنجاب کے م ختلف تعلیمی اداروں میں حدیث کے موضوع پر کچھ لیکچرز دیے جو تحقیق لفظ حدیث، تاریخ حدیث، موضوع حدیث، ضرورت حدیث، مقام حدیث، اخبار حدیث، قرآن الحدیث، حجیت حدیث، حفاظت حدیث، تدوین حدیث، رجال حدیث، شیعہ اور علم حدیث، اسلوب حدیث، امثال حدیث، غریب الحدیث،آداب الحدیث، قواعد الحدیث، اقسام الحدیث، متون الحدیث، شروح حدیث، تراجم حدیث، ائمہ حدیث، فقہاءحدیث، ائمہ جرح و تعدیل، ائمہ تالیف، ائمہ تخریج، اہل حدیث، منکرین حدیث، مدارس حدیث جیسے اہم ترین موضوعات کا احاطہ کرتے ہیں۔ اللہ رب العزت سے دعا ہے کہ وہ مولف کو اور اسکی اشاعت و ترویج میں حصہ لینے والوں کو بھی ان خوش قسمتوں میں جگہ دے جنہوں نے پورے اخلاص و محبت سے علم نبوت کے گرد پہرہ دیا ہے اور اس کتاب کو عوام الناس کے لیے نافع اور مولف کے لیے ذریعہ آخرت بنائے۔ آمین


:::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::


Muhaddiseen-e-Uzzam aur unki Kitabain (محدثین عظام اور انکی کتابیں)

January 6, 2009
mhd_bksدور حاضر میں جدیدیت اور عقل پرستی کی میزان کو بنیاد بنا کر حضور صلی اللہ علیہ وسلم کے فرامین ارشادات کے حیثیت کو مشکوک بنا کر دین کے بہت بڑے حصے کو ناقابل عمل ثابت کرنے کی کوشش کی جارہی ہیں؛ اورصحابہ کرام رضی اللہ عنہم اور علماء و محدثین عظام کی طرف سے پیش کی جانی والی قربانیوں کو ضاءع کرنے کی کوشش کی جا رہی ہیں۔ زیر نظر کتاب میںمولف نے صحاح ستہ یعنی صحیح بخاری؛ صحیح مسلم؛ سنن ترمذی؛ سنن ابی داءود؛ سنن نساءی؛ سنن ابن ماجہ کے علاوہ موطا امام مالک؛ موطا امام محمد اور طحاوی شریف؛ ان نو معیاری کتب اور ان کے مصنفین کے تفصیلی حالات قلمبند کیے ہیں تاکہ عوام الناس ان کتب پر کی جانیوالی محنت اور مصنفین کی طرف سے دی جانیوالی قربانیوں سے آگاہی حاصل کر سکیں۔ اور دینی مساءل کے اہم ماخذ ”حدیث” کی شرعی حیثیت سے واقف ہو کراپنی دنیا اور آخرت سنوار سکیں۔


::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::



Muhaddiseen-e-Uzzam aur unki Kitabain (محدثین عظام اور انکی کتابیں)

January 6, 2009
mhd_bksدور حاضر میں جدیدیت اور عقل پرستی کی میزان کو بنیاد بنا کر حضور صلی اللہ علیہ وسلم کے فرامین ارشادات کے حیثیت کو مشکوک بنا کر دین کے بہت بڑے حصے کو ناقابل عمل ثابت کرنے کی کوشش کی جارہی ہیں؛ اورصحابہ کرام رضی اللہ عنہم اور علماء و محدثین عظام کی طرف سے پیش کی جانی والی قربانیوں کو ضاءع کرنے کی کوشش کی جا رہی ہیں۔ زیر نظر کتاب میںمولف نے صحاح ستہ یعنی صحیح بخاری؛ صحیح مسلم؛ سنن ترمذی؛ سنن ابی داءود؛ سنن نساءی؛ سنن ابن ماجہ کے علاوہ موطا امام مالک؛ موطا امام محمد اور طحاوی شریف؛ ان نو معیاری کتب اور ان کے مصنفین کے تفصیلی حالات قلمبند کیے ہیں تاکہ عوام الناس ان کتب پر کی جانیوالی محنت اور مصنفین کی طرف سے دی جانیوالی قربانیوں سے آگاہی حاصل کر سکیں۔ اور دینی مساءل کے اہم ماخذ ”حدیث” کی شرعی حیثیت سے واقف ہو کراپنی دنیا اور آخرت سنوار سکیں۔








جارې...........



منبع  :راه سنت




{{{{{}{{{{{{{{{{{{{{{{{{{{}}}}}}}}}}}}}}}}}}}}}}}}}}}}}}}}}}




Free Urdu Books Download in PDF

Free Islamic eBooks
ان كتابوں كو پڑهنے كے لئے ايڈوب ريڈر ڈاون لوڈ كريں


Free Islamic eBooks in PDF
Updated: November 14, 2011


eBooks

علوم القرآن
مفتى محمد تقى عثمانى
علوم القرآن
DownLoad in PDF format 11.03 MB : سائز  510 : صفحات 
Line
Halal Food Production - A compelete Book
Mian N. Riaz
Muhammad M. Chaudry
حلال فوڈ
DownLoad in PDF format 5.53 MB : سائز  348 : صفحات 
Line
خميرى مسلمان | دو بہنوں كي ايمان افروز داستان
بنت عادل
خميرى مسلمان
DownLoad in PDF format 25.7 MB : سائز  120 : صفحات 
Line
تفسير عثمانى مكمل فونٹ بيسڈ فہرست كي سهولت كے ساته
علامہ شبير احمد عثمانى رحمہ اللہ تعالى
تفسير عثمانى
DownLoad in PDF format 33.8 MB : سائز  2506 : صفحات 
Line
عقائد علماء ديو بند - المهند علي المفند
حضرت مولانا خليل أحمد سهارن پوري
علماء ديو بند کے عقائد و نظريات پر مشتمل ايک مستند کتاب
عقائد علماء ديو بند
DownLoad in PDF format 4.13 MB : سائز  36 : صفحات 
Line
المهدي والمسيح
مولانا محمد يوسف لدهيانوي
DownLoad in PDF format 2.78 MB : سائز  24 : صفحات 
Line
حضرت مسيح عليه السلام كي شناخت
مولانا محمد يوسف لدهيانوي
DownLoad in PDF format 2.43 MB : سائز  20 : صفحات 
Line
إسلام اور کفر کا معيار
مُفتي محمد شفيع
DownLoad in PDF format 1.94 MB : سائز  17 : صفحات 
Line


ابواب سعادت - عورتوں کي خوبيوں کا بيان
افادات صوفي محمد اقبال صاحب
خواتين اور ان کے حقوق پر لکهي گئي بهترين کتاب
DownLoad in PDF format March 17, 2009 19.6 MB : سائز  48 : صفحات 
Line
دو روزے
سيد أبو الحسن علي ندوي
DownLoad in PDF format 1.34 MB : سائز  13 : صفحات 
Line


سيرت النبي صلي الله عليه وسلم
مفتي تقي عُثماني
DownLoad in PDF format 2.68 MB : سائز  22 : صفحات 
Line
سيرت النبي صلي الله عليه وسلم کے جلسے و جلوس
مفتي تقي عُثماني
DownLoad in PDF format 1.86 MB : سائز  15 : صفحات 
Line
مروجه صلوة و سلام کي شرعي حيثيت
مُفتي محمد شفيع
ايک سوال کے جواب ميں مفتي صاحب رحمه الله کا فتوي
DownLoad in PDF format 943 KB : سائز  8 : صفحات 
Line











ربيع اول ميں جوش محبت
مفتي رشيد احمد لدهيانوى
ربيع اول ميں جوش محبت
DownLoad in PDF format 4.80 MB : سائز  23 : صفحات 
Line
قادياني اور دوسرے کافروں ميں فرق
مولانا محمد يوسف لدهيانوي
Qadiani قاديانى
DownLoad in PDF format 4.80 MB : سائز  23 : صفحات 
Line









Line
جماعت المُسلمين تحقيق کے آئنه ميں
مولانا محمد أمين صفدر
DownLoad in PDF format 4.80 MB : سائز  28 : صفحات 
Line
آئينه مِرزائيت
إحسان باري
DownLoad in PDF format 1.71 MB : سائز  17 : صفحات 
Line
آغا خان فاونڈيشن
فيض الله چترالي
DownLoad in PDF format 1.59 MB : سائز  15 : صفحات 
Line
إسماعيلي آغاخاني بوهري
سيد تنظيم حُسين
DownLoad in PDF format 3.55 MB : سائز  35 : صفحات 
Line









Line
الله تعالي كي توهين
سعيد أحمد قادري
DownLoad in PDF format 2.87 MB : سائز  15 : صفحات 
Line
أنبياء كرام كي توهين
سعيد أحمد قادري
DownLoad in PDF format 2.95 MB : سائز  28 : صفحات 
Line
صحابه كرام كي توهين
سعيد أحمد قادري
DownLoad in PDF format 1.26 MB : سائز  12 : صفحات 
Line


حديث اور سنت ميں فرق
مولانا امين صفدر اوكاڑوى
حديث اور سنت
DownLoad in PDF format Feb 22, 2011 513 KB : سائز  18 : صفحات 
Line
غزوات النبي صلي الله عليه وسلم اور شهداء کے ناموں کي مکمل فهرست
سيد قدير ابو محمد الطيبي
صرف شهداء غزوات کے ناموں کي فهرست يهاں سے ڈاون لوڈ کريں
غزوات النبى عليہ السلام
DownLoad in PDF format March 21, 2009 9.98 MB : سائز  22 : صفحات 
Line
صبح صادق و کاذب
أحمد رضا خان بريلوي
DownLoad in PDF format March 16, 2009 1.32 MB : سائز  13 : صفحات 
Line
نمازيں سنت کے مطابق پڑهيں
مفتي محمد تقي عثماني
DownLoad in PDF format March 12, 2009 2.34 MB : سائز  32 : صفحات 
Line
مسائل قرباني
مفتي ولي حسن تونكي
DownLoad in PDF format 2.88 MB : سائز  27 : صفحات 
Line
فلکيات جديده رويت هلال کا مسئله
مولانا محمد مُوسي روحاني بازي
DownLoad in PDF format 3.78 MB : سائز  23 : صفحات 
Line
تين طلاق کا حُکم
مفتي تقي عُثماني
DownLoad in PDF format 3.28 MB : سائز  30 : صفحات 


قرآني دعائيں
قرآن کريم ميں وارد ڈعائيں مع ترجمه
DownLoad in PDF format March 21, 2009 2.21 MB : سائز  15 : صفحات 
Line
آسان نماز مع جاليس مسنون دعائيں
مولانا محمد عاشق الهي بلند شهري
DownLoad in PDF format March 16, 2009 8 MB : سائز  64 : صفحات 
Line
مقبول دعائيں
وقف لله تعالي
مجرب و مستند وظائف پر مشتمل رساله
DownLoad in PDF format March 16, 2009 3.78 MB : سائز  13 : صفحات 
Line
أدعيه ماثوره
سنت سے ثابت مختصر دعاءيں
DownLoad in PDF format March 17, 2009 1.76 MB : سائز  6 : صفحات 

 

شيفته کا سفر نامه حج
ماهنامه قومي ڈائجسٹ لاهور
DownLoad in PDF format March 26, 2009 6.57 MB : سائز  14 : صفحات 

دار العلوم ديو بند کي تصويري کتاب
دار العلوم ديو بند
DownLoad in PDF format March 16, 2009 8.40 MB : سائز  22 : صفحات 

2 comments:

  1. Nice sharing.Find latest Jobs in Asia,Europe,Africa & Gulf and all over the world at http://toppakjobs.blogspot.com

    ReplyDelete
  2. Assalam o Alaikum wa Rahmatullah wa barakatoho,
    Muhtram Shaikh! sb I am student of islamic studies in Srgodha University.The topic of my thesis for Phd is" Uloom ul Quran wa Tafseer ul Quran pr ghair matboa urdu mwad" plez guide and send me the relavent material.I will pray that Allah Taala succeed you in this world and the world after,forgive all your mistakes.
    yours sincerely,
    Rafiuddin
    Basti dewan wali st. Zafar bloch old Chiniot road Jhang saddar
    03336750546 - 03016998303 Email address drfi@ymail.com

    ReplyDelete

السلام علیکم ورحمة الله وبرکاته

ښه انسان د ښو اعمالو په وجه پېژندلې شې کنه ښې خبرې خو بد خلک هم کوې


لوستونکودفائدې لپاره تاسوهم خپل ملګروسره معلومات نظراو تجربه شریک کړئ


خپل نوم ، ايمل ادرس ، عنوان ، د اوسيدو ځای او خپله پوښتنه وليکئ


طریقه د کمنټ
Name
URL

لیکل لازمی نه دې اختیارې دې فقط خپل نوم وا لیکا URL


اویا
Anonymous
کلیک کړې
سائیٹ پر آنے والے معزز مہمانوں کو خوش آمدید.



بحث عن:

البرامج التالية لتصفح أفضل

This Programs for better View

لوستونکودفائدې لپاره تاسوهم خپل معلومات نظراو تجربه شریک کړئ

MrAbohisham's Channel

هډه وال کے ایس ایم ایس اپنے موبائل میں حاصل کرنے کے لئے اپنا نمبر لکھ کرسائن اپ کردیں پھر آپ کے نمبر میں ایک کوڈ آے وہ یہاں لکھ لیں




که غواړۍ چی ستاسو مقالي، شعرونه او پيغامونه په هډاوال ويب کې د پښتو ژبی مينه والوته وړاندی شي نو د بريښنا ليک له لياري ېي مونږ ته راواستوۍ
اوس تاسوعربی: پشتو :اردو:مضمون او لیکنی راستولئی شی

زمونږ د بريښناليک پته په ﻻندی ډول ده:ـ

hadawal.org@gmail.com

Contact Form

Name

Email *

Message *

د هډه وال وېب , میلمانه

Online User